ٹیکسٹائل سیکٹر کے ایکسپورٹ میں اضافہ حکومت کی مثبت پالیسیوں کا نتیجہ: اسد عمر

ٹیکسٹائل سیکٹر کے ایکسپورٹ میں اضافہ حکومت کی مثبت پالیسیوں کا نتیجہ: اسد ...

  

        فیصل آباد(سپیشل رپورٹر)وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی، ترقی اور خصوصی اقدامات اسد عمر نے  پاکستان ہوزری مینوفیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسو سی ایشن کے دفتر میں ایکسپورٹرز کی شکایت پریارن کی قلت پر فرانزیک آڈٹ کرانے کا اعلان کردیا۔ انہوں نے کہاکہ ٹیکسٹائل سیکٹر کی ایکسپورٹ میں اضافہ واضع طور پر اس بات کی نشاندہی کرتاہے کہ یہ ہماری حکومت کی مثبت پالیسیوں کا نتیجہ ہے۔انہوں نے کہا کہ دنیا میں کوروناکی وباء پھیلنے کے باوجود ہماری بہتر منصوبہ بندی کے تحت نہ صرف اس وباء پر قابو پانے بلکہ صنعتکاروں کی صنعتوں کا پہیہ بھی جاری رکھا جس سے نہ صرف ملکی ایکسپورٹ کو بڑھایا گیا بلکہ مزدوروں کو روزگار بھی فراہم کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ حکومتی کی بہتر حکمت عملی سے کورنا پر قابو پانے والا پاکستان واحد ملک ہے جو عالمی جریدے کے انڈیکس میں پہلی تین پوزیشنز پر رہا۔چیئرمین پی ایچ ایم اے میاں کاشف ضیاء نے وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے وژن کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ جنہوں نے  نہ صرف ڈی ایل ٹی ایل کے پرانے ریفنڈز جاری کئے بلکہ کوروناکی وباء کے دوران کاروبار جاری رکھنے کی اجازت دی۔سابق چیئرمین میاں فرخ اقبال نے کہاکہ کاٹن کی پیداوار بڑھنے کے باوجود یارن کی قیمتیں مسلسل بڑھ رہی ہیں، انہوں نے کہاکہ ملک میں یارن کی کمی نہیں ہے مگر مافیا نے اس کو سٹاک کیا ہو ا ہے لہذا اس کا فرانزک آڈٹ کر کے اس مسئلے کو ہمیشہ کیلئے حل کیا جائے۔وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی، ترقی اور خصوصی اقدامات اسد عمر نے یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ میں عمران خان کے نوٹس میں لا کر تمام تر مسائل جلد سے جلد حل کرنے کی کو شش کرونگا۔انہوں نے کہاکہ تمام مسائل کے حل کیلئے عنقریب ہوزری ایسوسی ایشن کا وفد اسلام آباد بلا کر ان کے تمام مسائل حل کردئیے جائیں گے۔

اسد عمر

مزید :

پشاورصفحہ آخر -