سکھر، محکمہ کسٹمز کی مبینہ کرپشن کے خلاف سول سوسائٹی سڑکوں پر آگئی

  سکھر، محکمہ کسٹمز کی مبینہ کرپشن کے خلاف سول سوسائٹی سڑکوں پر آگئی

  

سکھر(ڈسٹرکٹ رپورٹر)محکمہ کسٹمز سکھر کے عملے کی مبینہ کرپشن کے خلاف سکھر کی سول سوسائٹی سڑکوں پر آگئی، تلف کردہ اشیاء میں خرد برد کا نوٹس لیکر مزید سامان نذر آتش کرنا بند کیا جائے، سول سوسائٹی نمائندگان کا بالا حکام سے مطالبہ، تفصیلا ت کے مطابق سکھر کی مختلف سماجی تنظیموں اور سول سوسائٹی کے زیر اہتمام شہریوں کی کثیر تعداد نے محکمہ کسٹم انٹیلی جنس سکھر اور محکمہ کسٹم سکھر کی مبینہ کرپشن اورپکڑ ے جانیوالے سامان میں خرد برد کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا اور نعریبازی کی گئی، مظاہرے میں شامل سماجی تنظیموں اور سول سوسائٹی کے رہنماؤں یعقوب سولنگی، کامران چوہان، لالہ عبدالحمید، شاہنواز، عرفان خان، کفایت و دیگر کا کہنا تھا کہ متعلقہ محکموں کی نااہلی کی وجہ سے شہر میں مضر صحت اشیاء  پان پراگ، گٹکا کی خرید و فروخت کا سلسلہ جاری ہے جو لمحہ فکریہ ہے، گذشتہ روز محکمہ کسٹم انٹیلی جنس سکھر نے کاروائی کے دوران پکڑے جانے والے سامان کو نذر آتش کیا اور اس کی مالیت کروڑوں روپے بتائی لیکن افسوس وہاں پر موجود عدالتی افسران، تاجر تنظیموں نے بھی اس بات پر تشویش کا اظہار کیا گیا کہ جو بتایا گیا ہے سامان اس سے کم نظر آرہا ہے اب محکمہ کسٹم سکھر نے بھی پکڑے جانے والے سامان کو تلف کرنے کا لیٹر جاری کردیا ہے ہمیں لگتا ہے اس بھی ایسا ہی کیا جائیگا سامان کم دیکھایا جائیگا اور بتایا زیادہ جائیگا اور بچ جانے والا سامان مارکیٹ میں فروخت کر دیا جائیگا جس کی وجہ سے نوجوان نسل مزید تباہ ہو جائیگی ایسا لگتا ہے متعلقہ محکموں کے منہ پر نوٹوں کا خون جم گیا ہے سماجی تنظیموں اور سول سوسائٹی کے نمائندگان نے  افسران و اہلکاروں کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -