صدارتی نظام کا شوشا چھوڑنا قابل مذمت ہے،چوہدری اظہر حسین 

صدارتی نظام کا شوشا چھوڑنا قابل مذمت ہے،چوہدری اظہر حسین 

  

سکھر(ڈسٹرکٹ رپورٹر)پاکستان پیپلز پارٹی سٹی سکھر کے سیکریٹری اطلاعات چوہدری اظہر حسنین نے نیازی حکومت کی جانب سے صدارتی نظام کے شوشے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے ضمنی بجٹ کے بعد آنے والے مہنگائی کے طوفان سے توجہ ہٹانے سے مرکوز کیا ہے جاری کردہ بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ پاکستان کے آئین میں صدارتی نظام کی کوئی گنجائش نہیں، حکومت اسی طرح کی دھمکیوں اور شوشوں کی بیساکھیوں کے سہارے چل رہی ہے، ضمنی بجٹ کے اثرات سے جو مہنگائی کا سونامی آنے والا ہے اس سے عوام کی کمر ٹوٹ جائے گی انہوں نے کہا کے عمران نیازی اور اسکے حواریوں نے اس ملک کو کئی سال پیچھے دھکیل دیا ہے جس کا خمیازہ آنے والے دنوں میں عوام کو بھگتنا پڑیگا، عمران نیازی کی دھمکیاں بلکل اس نکمے بچے کی طرح ہیں جسے محلے کے بچے کھلاتے نہیں اور وہ مختلف حربوں سے کھیل خراب کرنے کے درپے رہتا ہے، پاکستان کی عوام بلاول بھٹو زرداری کی آواز پر لبیک کہتے ہوئے 27 فروری کے لانگ مارچ میں بھرپور شرکت کرے گی اور اس نکمے بچے کو اس کے کرتوتوں کی سزا دیلوا کر دم لے گی، پی ٹی آئی سندھ کی جانب سے اعلان کردہ لانگ مارچ مہنگائی کے مارے عوام کے جوتوں کے خوف کے باعث شروع ہونے سے پہلے ہی اختتام پذیر ہو جائیگا،جو لوگ اپنے حلقوں میں جانے سے ڈرتے ہیں وہ لوگ لانگ مارچ کیا خاک کرینگے،?روزگار چھین کر نوجوان پروگرام، گھر چھین کر مسافر خانے، دو وقت کی روٹی چھین کر لنگر خانے، سستی ادویات چھین کر صحت کارڈ اور چینی، گندم، گیس، یوریا کا بحران پیدا کر کے کھربوں روپے کمیشن بٹورنے والا اور کوئی نہیں صرف عمران نیازی ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -