یمن کی جیل میں فضائی حملہ، 100سے زائد افراد مارے جانے کی اطلاعات

یمن کی جیل میں فضائی حملہ، 100سے زائد افراد مارے جانے کی اطلاعات
یمن کی جیل میں فضائی حملہ، 100سے زائد افراد مارے جانے کی اطلاعات
سورس: Twitter

  

صنعاء(مانیٹرنگ ڈیسک) یمن میں طویل عرصے سے جاری جنگ میں ایک بار پھر تیزی آ گئی ہے اور گزشتہ روز یمنی شہر صعدہ کی ایک جیل پر فضائی حملے میں 100سے زائد لوگ لقمہ اجل بن جانے کی اطلاعات ہیں۔ اس کے علاوہ بمباری کے ایک الگ واقعے میں تین بچے موت کے گھاٹ اتر گئے۔ ڈیلی ڈان کے مطابق یمن میں سعودی اتحادی فورسز کے خلاف برسرپیکار حوثی باغیوں کی طرف سے ایک ہولناک ویڈیو جاری کی گئی ہے جس میں جیل پر ہونے والے فضائی حملے کے بعد ملبے میں دبی مسخ شدہ لاشیں نظرآ رہی ہوتی ہیں۔ 

دوسری طرف سیو دی چلڈرن نامی تنظیم کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ یمن کے ساحلی شہرہ حدیدہ میں سعودی اتحادی افواج کے ایک ٹیلی کمیونی کیشن سہولت مرکز پر کیے گئے فضائی حملے میں 3بچے جاں بحق ہو گئے ۔ بچے اس عمارت کے قریب گراﺅنڈ میں فٹ بال کھیل رہے تھے جب بمباری کی گئی۔ اس سہولت مرکز کی تباہی کے بعد پورے یمن میں انٹرنیٹ بھی بند ہو چکا ہے۔رپورٹ کے مطابق سعودی اتحادی افواج کی طرف سے یہ نئے حملے حوثی باغیوں کے ابوظہبی پر چند دن قبل کیے گئے ڈرون حملوں کے بعد کیے جا رہے ہیں جن میں 3لوگ جاں بحق ہو گئے تھے۔

ڈرون حملوں کے بعد متحدہ عرب امارات کی طرف سے جوابی حملوں کی دھمکی دی گئی تھی۔صعدہ میں جیل پر ہونے والے حملے میں سینکڑوں افراد کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے۔ ڈاکٹرز ود آﺅٹ بارڈرز کے مطابق جیل پر حملے کے بعد ہسپتال زخمیوں سے بھر گئے ہیں۔ صرف ایک ہسپتال میں 200زخمی لائے گئے ہیں۔

مزید :

عرب دنیا -