رشوت کا قلع قمع کرنے کے لئے36 تجاویز

رشوت کا قلع قمع کرنے کے لئے36 تجاویز

                                        کسی بھی منصوبے یا تحریک کو پایہ¿ تکمیل تک پہنچانے کے لیے مندرجہ ذیل تین چیزوں کی ضرورت پڑتی ہے۔

-1حکمت عملی 

-2پیسہ

-3 اَن تھک محنت

 حکمت عملی پیشِ خدمت ہے۔ پیسہ مال دار لوگ لگائیں گے اور محنت ہم لوگ کریں گے تو اس ملک سے رشوت کا قلع قمع ہو جائے گا۔

تو آئیے ہم سب مل کر یہ عہد کریں کہ اپنے معاشرے اور ملک کو کرپشن سے پاک ملک بنائیں گے۔ اس کے لیے مندرجہ ذیل اقدامات فوری طور پر کرنے ہوں گے:

-1 اگر آپ طالب علم ہیں تو رشوت کے خلاف جہاد کے لئے سینہ سپر ہو جائیں۔ ہر فورم اور ہر مجلس میں رشوت کے خلاف آواز بلند کریں اور رشوت نہ لینے کا عہد انفرادی اور اجتماعی حیثیت سے کریں۔ آپ میں سے اچھے مقرر دوسرے اسکولوں، کالجوں اور یونیورسٹیز میں کرپشن کے خلاف لیکچر دیں اور تقریریں کریں۔ طلباءتنظیموں کو چاہیے کہ اپنے Functions میں اعلیٰ سرکاری عہدوں ست ریٹائرڈ اور ایماندار افسروں اور ریٹائرڈ جض صاحبان کو کرپشن کے خلاف لیکچر دینے کے لیے مدعو کریں۔

-2اگر آپ استاد ہیں تو آپ کی کامیابی کی دلیل یہ ہوگی کہ آپ شاگردوں کو یہ باور کرانے میں کامیاب ہو جاتے ہیں کہ رشوت لینے اور رشوت ینے کے ہولناک اور سنگین نتائگ برآمد ہوتے ہیں۔ امتحانات میں رشوت کے موضوع پر مضمون لکھنے کو دیں۔

-3 اگر آپ سرکاری آفسر ہیں یہ ماتحت تو آپ عہد کریں کہ آپ نہ تو رشوت لیں گے اور نہ ہی دیں گے اور رشوت کے خیلاف جنگ میں چٹان کی طرح ڈٹ جائیں گے۔

-4اگر آپ جامعہ مسجد کے خطیب ہیں تو ہر جمعةالمبارک میں اپنے وعظ میں کرپشن کو موضوع پر نمازیوں کو سیاق و اسباق کے ساتھ اس کہ ہولناک تباہ کاریوں سے آگاہ کرتے رہیں۔

-5 آگر آپ صنعت کار تاجر یا کنٹریکٹر ہیں اور آپ کا تعلق پاکستان کے امیر ترین طبقے سے ہے تو پاکستان کی سالمیت اور بقاءکے نام پر عہد کرین کہ آپ کسی سرکاری آفسر یا پارلیمنٹرین کو کسی بھی کام کے لیے رشوت نہیں پیش کریں گے چاہے رشوت کی رقم سے کئی گنا زیادہ رقم سرکاری خزانے میں کیوں نہ جمع کروانی پڑے۔

-6 اگر آپ جج ہیں اور آپ کی عدالت میں جن لوگوں پر رشوت کا الزام ثابت ہو جائے تو ان لوگوں سے رشوت کی ساری رقم برآمد کر کے سرکاری خزانے میں غریبوں کی امداد کے لئے جمع کروائی جائے اور رشوت خور کو قرار واقعی سزادے کر لوگوں کے لئے باعث عبرت بنایا جائے۔

-7عوام رشوت خور لوگوں کا سماجی یعنی سوشل (social) بائیکاٹ کریں۔

-8ہر صوبے میں محکمہ تعلیم اپنے اپنے محکموں میں ایک ذیلی ادارہ ”اینٹی کرپشن“ کے نام سے قائم کرے، سرمایہ حکومت فراہم کرے۔ یہ ادارہ بہترین اہمیت کے حامل اسکالرز اور ادیبوں سے رشوت کے خلاف اسکولوں، کالجوں، یونیورسٹیز، سرکاری دفاتر اور ٹریننگ سنٹرز میں لیکچرز دلوائیں اوررشوت خور افسروں اور ماتحت پر نظر رکھے۔

-9 اگر ٹیکسی، رکشہ، بس یا ٹرک ڈرائیور ہیں تو مندرجہ ذیل تحریروں میں سے کوئی ایک جلی حروف میں اپنی گاڑی کے پیچھے لکھیں:

(i) ”رشوت دینے والا اور رشوت لینے والا دنوں جہنمی ہیں۔“

(ii) رشوت خور پر اللہ کی لعنت ۔

(iii) رشوت ستانی شیطانی عمل ہے۔

(iv)رشوت ستانی ضمیر کی موت ہے۔

(v)رشوت مٹاو¿، پاکستان بچاو¿ ۔

(vi)رشوت خور مسلمان کے نام پر دھبہ ہےں۔

-10 اگر آپ کسی سیاسی جماعت کے سربراہ ہیں تو مندرجہ بالا عبارتوں کے اسٹیکر چھپوا کر رکشہ، ٹیکسی اور بس ڈرائیوروں میں مفت تقسیم کروایں اور کرپشن کے خلاف لیکچر دینے کے لئے مختلف شہروں میں اپنے مستقل نمائندے رکھیں۔

-11 اگر آپ کسی دکان، شاپنگ پلازہ، ریسٹورنٹ یا ہوٹل بشمول فائیو سٹار ہوٹل کے مالک ہیں تو اپنی دکان ہوٹل یا ریسٹورنٹ اور ہوٹل ہال میں مندرجہ ذیل عبارت جلی حروف سے آویزاں کریں۔

قولِ رسولﷺ ہے: ” رشوت دینے والا اور رشوت لینے والا دونوں جہنمی ہیں “۔

-12 اگر آپ بنک (Bank) کے سربراہ ہیں تو چیک بک اور چیکوں (Ceques) اور تمام کرنسی نوٹوں پر مندرجی ذیل عبارت تحریر کروائیں۔ ”حصولِ رزق حلال عین عبادت ہے“۔

-13 اگر آپ کا تعلق ٹیلی ویژن یا فلم انڈسٹری سے ہے اور آپ پروڈیوسر یا فلم ڈائریکٹر ہیں تو رشوت ستانی سے متعلق ڈرامے، فلمیں اور ڈاکومیںتری فلمز بنائیں اور ان کا معاوضہ زیادہ ادا کیا جائے۔

-14اگر آپ کا تعلق سول سوسائٹی یا ہیومن رائٹس آگنائزیشن سے ہے تو آپ کرپشن کے خلاف محاذ بنائیں ریلیز نکالیں اسکول، کالجز اور یونیورسٹیز میں طلباء کو رشوت ستانی کے موضوع پر لیکچر دیں اور اعلیٰ سرکاری عہدوں سے ریٹائرڈ افسروں کو اپنا ممبر بنائیں۔

-15 اگر آپ یونیورسٹیز، کالجز، اور سکولز کو وائس چانسلر یا پرنسپل ہیں تو سال میں ایک مرتبہ تمام طلباءکو کرپشن کیخلاف لیکچر دیں۔

-16 اگر آپ خاتون خانہ یعنی گھریلو خاتون ہیں تو آپ اپنے شوہر کی جائز اور حلال کمائی پر اکتفا کریں اور اپنے شوہر کو کسی صورت رشوت کی طرف راغب نہ ہونے دیں۔

-17 اگر آپ ماضی میں رشوت ستانی میں ملوث رہے ہیں یا رشوت لے رہے ہیں یا رشوت لیتے لیتے ریٹائرڈ ہو چکے ہیں اور ہر وقت ایک انجانے سے خوف میں مبتلا رہتے ہیں اور اپنے کئے پر پشیمان ہیں اور آئندہ کی زندگی رسول اللہﷺ کے تابع کر کے گزارنے کے طالب ہیں تو سچے دل دے اللہ سے رجوع کریں اور ہدایت کے طلبگار ہوں۔ اللہ یقیناً نجات کی کوئی راہ نکالے گا آپ کو چاہیے کے فکاحی کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں اور کرپشن کے خلاف تحریک مین شامل ہو کر ثواب دارین حاصل کریں۔

-18 اگر آپ نے ساری عمر رشوت نہیں لی خواہ آپ کا تعلق کسی سرکاری محکمے سے رہا ہو یا بزنس سے یا کسی قومی یا صوبائی اسمبلی کے ممبر یا سینیٹر رہے ہوں تو اپنے قیمتی وقت اور پیسے سے کےخلاف تحریک کو کامیاب بنانے اور اسے ہمیشہ زندہ رکھنے کے لیے اس میں شامل ہوکر تحریک کو آگے بڑھائیں۔

-19 اگر آپ صحافی (Journalist) ہیں یا اخبار یا رسالے کے ایڈیٹر (Editor) یا مالک ہیں تو رشوت کے نام سے اردو اور انگریزی میں بالترتیب ”رشوت ستانی“ اور "Horror of Corrucption" کے نام سے رسائل شائع کرنے کا اہتمام کریں اور اس آمدنی سے رشوت مٹاو¿ تحریک کو مزید تقویت پہنچائیں۔

-20 اگر آپ ڈاکٹر ہیں تو عہد کریں کہ پوسٹ مارٹم اور میڈیکل رپورٹس لکھنے میں ہر قسم کے دباو¿ کو مسترد کر دیں گے۔

-21 پاکستانی عوام یہ عہد کریں کہ وہ رشوت ستانہ کے خلاف مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں گے اور دو سال کو اندر اندر ملک سے رشوت کا خاتمہ کر کے دم لیں گے۔

-22 اگر آپ وکیل (Lawyer) ہیں تو (وکلا برادری ہمارے معاشرے کی پڑھی لکھی اور قابل صد احترام Community ہے اور لوگوں کو ان کی بات کا اثر ہوتا ہے) آپ کو چاہیے کہ رشوت کے خلاف مہم میں شمولیت اختیار کر کے ملک کو رشوت کے اہنی شکنجے سے نجات دلانے میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں۔

-23 اگر آپ کا تعلق حکمران طبقے سے ہے تو آپ پر اصلاح احوال کی بھاری زمہ داری عائد ہوتی ہے آپ کو چاہیے کہ ملک سے رشوت ستانی فوری خاتمہ کرنے کے لئے فوری اقدامات کریں۔ تمام سرکاری محکموں کے سربراہوں اور افسروں ہر سال کے شروع میں رشوت نہ لینے سے متعلق "Warning Letter Issue" کروائیں۔ رشوت کے موضوع پر دفاتر میں لیکچرز دینے کا اہتمام کروائیں۔ اور ہر دفتر میں یہ عبارت تحریر کروائیں۔ قولِ رسولﷺ ہے: ”رشوت لینے والا اور رشوت دینے والا دونوں جہنمی ہیں۔ “

اگر آپ کا تعلق Richest Family of Pakistan 114- سے ہے تو آپ کو اسلامی جمہوریہ پاکستا ن کی بقاءو سلامتی ترقی کے لیے کچھ قربانی دینی ہوگی۔ آپ پاکستان کے بڑے شہروں میں ایک ایک Bangalow Donate کریں تاکہ ان میں اینٹی کرپسن آفس Establish کئے جاسکیں۔ ہر ٓفس میں چار پانچ افراد پر مشتمل عملے کا کام یہ ہو گا کہ وہ عوام اور طلبا میں کرپشن کے خلاف ایک آگاہی مہم ایک مربوط طریقے سے چلائیں جس میں طلباءکو لئے بہترین مقررین سے رابطے اور اسکول، کالجز اور یونیورسٹیز میں لیکچر دلوانا شامل ہوتا کہ آئندہ آنے والی Genration رشوت ستانی سے محفوط رہ سکے۔

-25 اگر آپ اوررسیز پاکستانیز ہیں تو کرپشن کے خلاف مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔ غیر ممالک میں Pakistan Friendship Association اس سلسلے میں اہم کردار کر سکتی ہے۔ انہیں چاہیے کہ قومہ اہمیت کے (Functions) پر پاکستانیوں کو کرپشن کے خلاف پاکستان میں ہونے والے اقدامات سے آگاہ کرتے رہیں۔ پاکستان میں کرپشن کے خلاف اشتہارات چھپوا کر یا مالی مدد کر کے اس مہم مین شامل ہو سکتے ہیں۔

-26 پاکستان یا بیرون ملک پاکستانیوں میں سے جو شخص یا Organaization مالی اعتبار سے یا دوسرے طریقوں سے بھر پور انداز مین کرپشن کے خاتمے کی کوشش کرے تو اسے یوم آزادی کے موقع پر صفارتی تمغہ حسن کارکردگی سے نوازا جائے۔

-27 اگر آپ سبزی فروش یا آپ کی گوشت یا مرغی کی دکان ہے تو رشوت کے خلاف جملے جلی حروف سے اپنی دکان میں آویزاں کریں۔

-28 این جی اوز کرپشن کے خلاف مہم میں شامل ہو کر اپنا بھرپور کردار ادا کریں۔

-29 اگر آپ کسی موبائل فون کمپنی کے مالک ہیں تو اپنے تمام Subscribers کو کرپشن کے خلاف ہر ماہ ایک عدد Message ضرور SMS کریں۔

-30 ہر سال 9 دسمبر کو UNO کی طرف سے عالمی اینٹی کرپشن ڈے (Anti Corruption ) منایا جاتا ہے۔ حکومت پاکستان سے درخواست ہے کہ اس دن محکمہ تعلیم پاکستان کے تمام اسکولز، کالجز اور یونیورسٹیز میں اینٹی کرپشن ڈے کا اہتمام کرے۔ اس دن صبح سے شام تک طلباءکو رشوت ستانی کے خلاف لیکچرز دئیے جائیں اور سیمینارز منعقد کیے جائیں۔ اس موقع پر محکمہ ڈاک کرپشن سے متعلق ڈاک کے ٹکٹ جاری کرائے۔

-31پاکستان کے تمام اسکولز ، کالجز اور یونیورسٹیز کے سلیبس میں (میٹرک تا گریجویشن تک) رشوت ستانی سے متعلق ایک Chapter کا اضافہ کیا جائے۔

-32میڈیا رشوت ستانی کے صرف قصے سنانے پر اکتفا نہ کرے بلکہ اس کی ”بیخ کنی“ کے لئے مثبت انداز میں عملی اقدامات تجویز کرے۔

-33عوام جنرل الیکشن میں ان لوگوں کو جو قومی اور صوبائی اسمبلیوں کے الیکشن لڑ رہے ہوں، اس وقت تک ووٹ نہ دیں جب تک وہ قرآن پاک پر حلف اٹھا کر رشوت نہ لینے اور نہ دینے کا عہد نہ کر لیں۔

-34 اسلامی جمہوریہ پاکستان کے تمام اخبارات و جرائد (اردو، انگریزی صوبائی اور علاقائی زبانوں میں) اپنے اخبار کے صفحہ اوّل یا کسی مناسب جگہ ہر روز کرپشن کے خلاف ایک جملہ تحریر کریں۔

-35 اسلامی جمہوریہ پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں غربت اور رشوت ستانی کے خلاف مہم کو اپنے انتخابی منشور کا جُز و لاینفک بنائیں۔

-36 اسلامی جمہوریہ پاکستان کے ہر تعلیمی ادارے کو تعلیمی معیار اور طلباءکی کریکٹر بلڈنگ (Character Building) کے معیار کو اس قدر بلند کرنا چاہیے جس کی وجہ سے انہیں یقین واثق ہو جائے کہ ان کی درس گاہ سے فارغ التحصیل طلباءکسی بھی سرکاری یا غیر سرکاری ادارے میں جا کر رشوت ستانی میں ملوث نہیں پائے جائیں گے۔   ٭

مزید : کالم