قانون کے آگے سرینڈر کرنیوالے قتل ہوجاتے ہیں ، عدالتیں نہ ہوں تو معاشرہ بھی نہیں رہتا: لاہورہائیکورٹ

قانون کے آگے سرینڈر کرنیوالے قتل ہوجاتے ہیں ، عدالتیں نہ ہوں تو معاشرہ بھی ...
قانون کے آگے سرینڈر کرنیوالے قتل ہوجاتے ہیں ، عدالتیں نہ ہوں تو معاشرہ بھی نہیں رہتا: لاہورہائیکورٹ

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) لاہور ہائی کورٹ نے عدالتوں میں سیکیورٹی کے حوالے سے آئی جی پنجاب کی رپورٹ مسترد کر دی اورریمارکس دیئے ہیں کہ جو لوگ قانون کے سامنے گھٹنے ٹیکتے ہیں ،اُنہیں احاطہ عدالت میں قتل کر دیا جاتا ہے ، عدالتیں نہ رہیں تو معاشرہ نہیں رہے گا۔چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے عدالتوں میں امن و امان کی صورتحال کے حوالے سے کیس کی سماعت کی۔ عدالت کے روبرو آئی جی پنجاب خان بیگ نے عدالتوں میں سیکیورٹی کے حوالے سے پولیس کی رپورٹ پیش کی جسے چیف جسٹس نے مسترد کرتے ہوئے کہا کہ آئی جی صاحب! معاملے کی سنجیدگی سے دیکھیں ، انصاف کے بغیر کوئی معاشرہ نہیں چل سکتا ۔فاضل عدالت نے احاطہ عدالت میں قتل کرنے والوں کو جلد گرفتار کرنے اور آئندہ سماعت پر ماتحت عدالتوں میں سیکیورٹی انتظامات کی جامع رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا۔ چیف جسٹس نے یکم اگست تک سماعت ملتوی کرتے ہوئے عدالتوں میں سیکیورٹی کیلئے تجاویز بھی طلب کر لیں۔

مزید : قومی