کرپشن کے میگا سیکنڈلز سمیت ہزاروں کیسز کوبے نقاب کیا، ڈی جی نیب لاہور

کرپشن کے میگا سیکنڈلز سمیت ہزاروں کیسز کوبے نقاب کیا، ڈی جی نیب لاہور

لاہور( خبرنگار) نیب لاہور نے گزشتہ ساڑھے اٹھارہ سالوں کے دوران مختلف سیاست دانوں، بیورو کریٹس اور بینک افسروں سمیت فراڈ میں ملوث 1161 کرپٹ اور بدعنوان ملزمان کو گرفتار کیا۔ نیب لاہور نے چیئر مین قومی احتساب بیورو (نیب) قمر زمان چوہدری کے کرپشن کے خلاف قومی سطح پر انسداد بدعنوانی پالیسی کے تحت بد عنوانی کے خلاف زیرو ٹالرنس کارویہ اپنایا اور نیب لاہور نے چیئر مین نیب کی جانب سے اختیار کردہ اس پالیسی پر عمل پیرا ہوتے ہوئے نیب لاہور نے کرپشن کے خلاف جہاد کا اعلان کر رکھا ہے۔ ان خیالات کا اظہار ڈائریکٹر جنرل نیب لاہور شہزاد سلیم نے نیب بیورو لاہور کے قیام سے ابتک کی کارکردگی کاذکر کرتے ہوئے صحافیوں سے بات چیت کے دوران کیا ہے۔ اس موقع پر ڈی جی نیب شہزاد سلیم نے کہا ہے کہ کارکردگی کے حوالے سے ان کا کہنا ہے کہ نیب لاہور نے کرپشن کے میگا سیکنڈلز سمیت ہزاروں کیسز کوبے نقاب کیا۔ انہوں نے بتایا کہ کرپشن کے ان کیسز میں اب تک کل 1161افراد کی گرفتاری عمل میں لائی جا چکی ہے جن میں بیورو کریٹ، بزنس مین، رئیل اسٹیٹ ایجنٹ، پولیس ملازمین کے علاوہ دیگر سرکاری و غیر سرکاری افراد شامل ہیں جبکہ اپریل 2017میں ان کے عہدہ سنبھالنے سے تاوقت85ملزمان کی گرفتاری عمل میں لائی جا چکی ہے جو گرفتاریوں کے لحاظ سے از خود ایک ریکارڈ ہے۔ ڈی جی نیب لاہور کا مذید کہنا ہے کہ بیورو کو قیام سے اب تک کل48437شکایات موصول ہوئیں جن میں سے 47907کو نمٹا دیا گیا جبکہ3331شکایات کو تصدیق کے مراحل میں داخل کیا گیا جن میں سے 3208کو تصدیقی مرحلہ میں ہی نمٹا یا گیا ان میں 659درخواستوں کو دوسرے متعلقہ اداروں میں بھجوا دیا گیا۔ مذید برآں نیب لاہور کی جانب سے 2099انکوائریوں کا آغاز کیا گیاجن میں سے 1951انکوائریاں پوری کی گئیں جبکہ 148انکوائریاں زیر سماعت ہیں۔1999سے اب تک نیب لاہور نے 1225انوسٹی گیشنز کا آغاز کیا جن میں سے 1139انوسٹی گیشنز کو مکمل کر لیا گیا اور 86 انوسٹی گیشنز بیورو میں زیر تفتیش ہیں۔

مزید : صفحہ آخر