مسجدا قصیٰ کی تالہ بندی پر حکومتی خاموشی نیتن یاھو مودی اتحاد کی خاموش تائید ہے، طاہر اشرفی

مسجدا قصیٰ کی تالہ بندی پر حکومتی خاموشی نیتن یاھو مودی اتحاد کی خاموش تائید ...

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)مسجد اقصیٰ کی تالہ بندی اور فلسطینیوں پر مظالم کے خلاف پاکستانی حکومت سمیت عالم اسلام کے حکمرانوں نے مجرمانہ خاموشی اختیار کر رکھی ہے ، پاکستان کی وزارت خارجہ کی مسجد اقصیٰ کی تالہ بندی کے خلاف خاموشی قابل مذمت اور قابل افسوس ہے ، نیتن یاھو اور مودی اتحاد کے بعد کشمیریوں اور فلسطینیوں کا اتحاد وقت کی اہم ضرورت ہے ، ملک بھر میں یوم آزادی الاقصیٰ پاکستانی قوم کا فلسطین اور القدس سے محبت کا اظہار ہے ، یہ بات پاکستان علماء کونسل اور اس کی حلیف جماعتوں کی اپیل پر ملک بھر میں وفاق المساجد پاکستان سے متصل ہزاروں مساجد میں خطبات جمعہ کے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہی ۔ حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے جامعہ مسجد عثمانیہ میں تحفظ ارض الحرمین الشریفین والاقصیٰ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستانی حکمرانوں کی غلط پالیسیوں کے نتیجہ میں آج اسلامی دنیا میں پاکستان تنہاء ہوتا چلا جا رہا ہے ، الاقصیٰ کی تالہ بندی پر پاکستانی حکومت کی خاموشی نیتن یاھو مودی اتحاد کی خاموش تائید ہے ، انہوں نے کہا کہ پاکستانی قوم کا فلسطین کے حوالہ سے واضح موقف ہے لیکن گذشتہ ایک ہفتہ کے دوران فلسطین میں ہونے والے مظالم اور مسجد اقصیٰ کی تالہ بندی پر پاکستانی حکومت کا موقف پاکستان قوم کے موقف کے برعکس ہے ، انہوں نے مطالبہ کیا کہ اسلامی سربراہی کانفرنس کا فوری طور پر اجلاس بلایا جائے اور اسرائیلی جارحیت کے خلاف مسلم ممالک عملی اقدامات اٹھائیں۔انہوں نے سعودی عرب اور اردون کی طرف سے مسجد اقصیٰ کی تالہ بندی ختم کروانے اور فلسطینیوں پر اسرائیلی مظالم کے خاتمے کیلئے کوششوں کی تحسین کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبد العزیز فوری طور پر عالم اسلام کے مسلم حکمرانوں کا فلسطین کی صورتحال پر اجلاس بلائیں۔

مزید : صفحہ آخر