میانی صاحب قبرستان میں مزاروں کی فہرست، نذرانے جمع کرنے کی پالیسی مرتب کرنے کا حکم

میانی صاحب قبرستان میں مزاروں کی فہرست، نذرانے جمع کرنے کی پالیسی مرتب کرنے ...

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ نے میانی صاحب قبرستان تجاوزات کیس میں ڈپٹی کمشنرکو میانی قبرستان میں تجاوزات کے خلاف آپریشن جاری رکھنے، قبرستان میں مزاروں کی فہرست اور نذرانے جمع کرنے کی پالیسی مرتب کرنے کا حکم دے دیا ہے ۔ جسٹس علی اکبرقریشی نے یہ ہدایات میانی قبرستان کمیٹی کی درخواست پرجاری کی ہیں، عدالتی حکم پرڈپٹی کمشنرسمیراحمد سید ، ایس پی ٹریفک صدر سردار آصف ، تحصیلدارسٹی سمیت دیگرافسران عدالت پیش ہوئے، عدالت میں ڈپٹی کمشنر سمیراحمد سید نے کارکردگی رپورٹ جمع کرواتے ہوئے کہا کہ میانی قبرستان میں تجاوزات کے مرتکب 18افراد کے خلاف مقدمات درج کئے گئے جبکہ 62افراد کو نوٹس جاری کئے ہیں۔ میانی قبرستان میں لائٹوں کی تنصیب کا کام بھی شروع کردیا گیاہے۔ عدالت نے ڈپٹی کمشنرکو حکم دیا کہ وہ میانی قبرستان کی حدود میں مزاروں سے حاصل ہونیوالے نذرانوں کی رقم میانی قبرستان کی ملکیت ہونے کے حوالے سے پالیسی بناکر عدالت میں پیش کریں۔ اگرحکومتی یا مقامی سطح پرکوئی مشکل پیش آئے تو عدالت کو آگاہ کیا جائے۔ ڈپٹی کمشنرنے عدالت کو یقین دہانی کروائی کہ وہ تجاوزات کے ساتھ ساتھ میانی قبرستان کے اندرقائم مزاروں کی آمدن کے حوالے سے جلداز جلد پالیسی بناکر عدالت میں پیش کردیں گے۔ ایس پی ٹریفک صدرسردارآصف نے عدالت کو کارکردگی رپورٹ پیش کرتے ہوئے بتایا کہ میانی قبرستان کے گردونواح میں تجاوزات کے مرتکب 72افراد کے خلاف مقدمات درج کئے گئے، 213کو وارننگ نوٹس دیا گیا جبکہ 204گاڑیاں کارلفٹر کے ذریعے اٹھائی گئیں ، عدالت نے ایس پی ٹریفک کو کاروائی جاری رکھنے کی ہدایت کی ہے۔

مزید : صفحہ آخر