پینٹا گون نے پاک فوج کے انسداد دہشتگردی اخراجات میں سے 5کروڑ ڈالر روک لیے

پینٹا گون نے پاک فوج کے انسداد دہشتگردی اخراجات میں سے 5کروڑ ڈالر روک لیے

واشنگٹن (اظہر زمان، خصوصی رپورٹ) پینٹا گون نے مالی سال 2016ء کی مد میں پاکستانی فوج کے انسداد دہشت گردی کے اخراجات کیلئے منظور شدہ کل نوے کروڑ ڈالر میں سے پانچ کروڑ ڈالر کے بقایا فنڈ کی ادائیگی روک دی ہے، قبل ازیں تیس کروڑ ڈالر روک کر دوسرے شعبوں میں منتقل کرکے ادائیگی کردی گئی تھی، امریکی محکمہ دفاع کے حکام نے آج میڈیا کو بتایا ہے کہ یہ فنڈ تکنیکی اعتبار سے فوجی امداد نہیں ہے جس کی مالی سال 2016ء کے کھاتے میں براہ راست ادائیگی 55 کروڑ ہوچکی ہے ایسا اس لئے کیا گیا ہے کہ کانگریس کی عائد کردہ شرط کے مطابق امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس نے یہ سرٹیفکیٹ جاری کرنا تھا کہ پاکستانی فوج حقانی نیٹ ورک کے خلاف مناسب کارروائی کررہی ہے جو انہوں نے جاری نہیں کیا، اس مالی سال کا عرصہ یکم اکتوبر 2015ء سے شروع ہوکر 30 ستمبر 2016ء کو ختم ہوتا ہے، یاد رہے کہ 2016ء کے مالی سال کیلئے امریکہ کی فوجی امداد میں کوئی تبدیلی نہیں ہوئی، کانگریس میں منظورہ شدہ بجٹ کے مطابق اس عرصے کی کل 32 کروڑ 20 لاکھ ڈالر کی فوجی امداد پاکستان کو مل چکی ہے اس میں سے 25 کروڑ 20 لاکھ ڈالر فارن ملٹری فنانسنگ، ایک کروڑ بیس لاکھ ڈالر انسداد منشیات، پچاس لاکھ ڈالر فوجی تربیت اور ایک کروڑ ڈالر ایٹمی ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ اور بارودی سرنگوں کی صفائی کیلئے شامل ہیں، یہ فیصلہ ایسے وقت آیا ہے جب ٹرمپ انتظامیہ نے اپنی تازہ پالیسی کے لئے پاکستان پر دباؤ بڑھا دیا ہے کہ وہ پاک افغان سرحد کے قریب ان دہشت گرد گروھوں کے خلاف زیادہ سخت کارروائی کرے جو وہاں سے سرحد پار افغانستان پر حملے کرتے ہیں۔

پینٹا گون

مزید : صفحہ اول