مسلم لیگ ن کا پاناما کیس کا فیصلہ قبول کرنے پر اتفاق

مسلم لیگ ن کا پاناما کیس کا فیصلہ قبول کرنے پر اتفاق

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) سپریم کورٹ میں پانامہ کیس کافیصلہ محفوظ کئے جانے کے بعدوزیراعظم نواز شریف کے زیر صدارت اعلیٰ سطح کا مشاورتی اجلاس ہوا ، جس میں عدالتی فیصلہ خلاف آنے کی صورت میں تمام قانونی و آئینی آپشنز استعمال کرنے پراتفاق ، وزیراعظم کے استعفے کا مطالبہ ایک بار پھر مسترد کر دیاگیا ،وزیرداخلہ چودھری نثارعلی خان کو منانے کا ٹاسک وزیراعلیٰ شہباز شریف کو دیدیا گیا ، وزیر اعظم کا اس موقع پر کہنا تھا عدالت کے سامنے سرتسلیم خم اور پورااعتماد کیا، بہتر فیصلے کی توقع ہے ۔تفصیلات کے مطابق جمعہ کو سپریم کورٹ میں پانامہ کیس کا فیصلہ محفوظ کئے جانے کے بعدوزیراعظم ہاؤس میں نوازشریف کے زیرصدارت مسلم لیگ(ن)کااعلیٰ سطح کامشاورتی اجلاس ہوا۔اجلاس میں پنجاب کے وزیراعلیٰ شہبازشریف ، وفاقی وزراء ، مشیروں اور معاونین نے شرکت کی ، شہبازشریف اجلاس میں شرکت کیلئے خصوصی طیارے میں اسلام آباد پہنچے تاہم وزیرداخلہ چوہدری نثار اس اہم اجلاس میں شریک نہیں ہوئے۔ وزیر اعظم کی قانونی ٹیم نے شرکاء کو سپریم کورٹ میں ہونیوالی سماعت اور ممکنہ فیصلے کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی جس کی روشنی میں آئندہ کے لائحہ عمل پر مشاورت کی گئی ۔اجلاس میں شریف خاندان کے وکلاء کے دلائل کوتسلی بخش قراردیاگیا اور فیصلہ کیا گیا کہ سپریم کورٹ کا ہر فیصلہ تسلیم کیا جائے گا، فیصلہ خلاف آنے کی صورت میں تمام قانونی و آئینی آپشنز استعمال کیے جائیں گے اور کسی صورت محاذآرائی نہیں کی جائے گی یہ فیصلہ بھی کیا گیا کہ کوئی ایسی روایت قائم کرنے کے حق میں نہیں کہ اعلیٰ عدلیہ کے فیصلوں کی بے توقیری ہو۔ اجلاس میں اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم کے استعفے کا مطالبہ ایک بار پھر مسترد کر دیاگیااورشرکاء نے کہاکہ نوازشریف منتخب وزیراعظم ہیں،انہیں عوام اورپارٹی کی مکمل تائیدحاصل ہے،تمام اتحادی وزیراعظم کیساتھ کھڑے ہیں ،اس موقع پراظہارخیال کرتے ہوئے نو از شریف نے کہا عدالت کے سامنے سرتسلیم خم کیا، عدالت پر پورااعتماد ہے، بہتر فیصلے کی توقع ہے ۔کچھ لوگ چور دروازے سے اقتدار میں آنے کے خواب دیکھ رہے ہیں، اقتدار کے بھوکے 2018 کے الیکشن کی تیاری کریں، ہماری کارکردگی پر عوام آئندہ بھی ہمیں ہی ووٹ دیں گے۔ بعض عناصر کو سی پیک اور ملکی ترقی ہضم نہیں ہو رہی۔ نجی ٹی وی کے مطابق مشاورتی اجلاس میں وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار کا ذکر ہوا تو وزیراعظم نے انہیں مرد بحر ا ن قرار دیتے ہوئے شہباز شریف کو منانے کا ٹاسک دیا۔قبل ازیں وزیر اعظم نواز شریف سے سربراہ خیبر پختونخوا ملی عوامی پارٹی محمود خا ن اچکزئی نے ملاقات کی ۔ملاقات میں پاناما کیس ، بلوچستان میں ترقیاتی منصوبوں اور سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال ہوا ،اس موقع پر محمود خان اچکزائی نے نواز شریف کو یقین دیائی کرائی کہ انکی پارٹی مسلم لیگ ن کیساتھ ہے کیونکہ وزیر اعظم نے ایک ایک پائی کا حساب دیا ہے جو قابل تحسین ہے۔اس سے پہلے وزیر اعظم نواز شریف کی زیر صدارت سول ایوایشن اتھارٹی کے امور سے متعلق اجلاس ہوا جس میں وزیر اعظم کو مشیر ہوابازی اور ڈی جی سول ایوی ایشن نے نیو اسلام آباد ائیر پورٹ سمیت اہم امور پر بریفنگ دی ،وزیر اعظم نے جاری منصوبے پر اطمینان کرتے ہوئے کہا تمام قومی ہوائی اڈوں پر عوام کو عالم معیار کے مطابق سہولتیں فراہم کی جائیں جبکہ اتھارٹی جاری تمام منصوبوں کی فروقت تکمیل یقینی بنائی جائے تاہم اس میں معیار اور شفافیت کو مد نظر رکھا جائے۔

ن لیگ اتفاق

مزید : کراچی صفحہ اول