پشاور میں قائم نجی سکول کا پرنسپل ٹیچر ز اور طالبات کیساتھ جنسی زیادتی کے الزام پر گرفتار

پشاور میں قائم نجی سکول کا پرنسپل ٹیچر ز اور طالبات کیساتھ جنسی زیادتی کے ...
پشاور میں قائم نجی سکول کا پرنسپل ٹیچر ز اور طالبات کیساتھ جنسی زیادتی کے الزام پر گرفتار

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن ) پشاور میں ایک اور سکینڈل سامنے آگیا ، حیات آباد چلڈرن سکول کے پرنسپل کو خواتین ٹیچرز اور طالبات کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے کے الزام پر گرفتار کر لیا گیا ۔

دنیا نیوز کے مطابق پشاور کے علاقے حیات آباد میں قائم “حیات آباد چلڈرن اکیڈمی“ کے پرنسپل عطاءاللہ مروت کو کئی سالوں سے خواتین ٹیچرز اور طالبات سے جنسی زیادتی کرنے اور فحش ویڈیوز بنانے کے جرم پر گرفتار کر لیا گیا ہے جس نے ٹیچرز کے ساتھ زیادتی اور طالبات کی ویڈیوز بنانے کا اعتراف بھی کر لیا ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ایک طالبعلم نے اس حوالے سے معلومات فراہم کیں جس کے بعد پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے سکول پرنسپل عطاءاللہ مروت کو گرفتار کر لیا۔ پولیس کے مطابق مجرم نے اپنے ابتدائی بیان میں سینکڑوں خواتین کے ساتھ جنسی بدفعلی کرنے اور ویڈیوز بنانے کا بھی اعتراف کر لیا ہے۔ ملزم کے قبضے سے، فحش ویڈیوز، جنسی ادویات اور منشیات بھی برآمد کی گئی ہیں۔

پولیس نے مجرم کیخلاف 12 مقدمات درج کرنے کے بعد  عدالت میں پیش کیا جہاں اس نے اپنے اوپر عائد الزامات کا اعتراف کر لیا ہے تاہم اس نے طالبات کے ساتھ جنسی فعل کرنے سے انکار کیا ہے۔ مجرم کے اعتراف کے بعد اسے جیل بھیج دیا گیا ہے۔پرنسپل اپنے تعلیمی ادارے کو ’قحبہ خانے‘ کے طور پر استعمال کر رہا تھا اور یہ کام کئی سالوں سے جاری تھا۔ پرنسپل نے سکول کے مختلف حصوں میں خفیہ کیمرے نصب کر رکھے تھے، جن سے قابل اعتراض ویڈیوز بنا کر طالبات اور ان کے والدین کو بلیک میل کیا جاتا تھا۔

مزید : پشاور