تحصیل لاہور میں تجاوزات کے خاتمے کیلئے مشترکہ اجلاس

تحصیل لاہور میں تجاوزات کے خاتمے کیلئے مشترکہ اجلاس

تورڈھیر(نمائندہ خصوصی) تحصیل لاہوربھرمیں عارضی ومستقل تجاوزات کے خلاف سنجیدہ اقدامات کیلئے مختلف محکموں کے حکام کا مشترکہ حتمی اجلاس کاانعقاد،تحصیل ناظم سہیل خان کے آفس میں منعقدہ اجلاس میں ٹی ایم اے لاہور،سی این ڈبلیو، ایری گیشن، محکمہ تعلیم ،پبلک ہیلتھ اورپولیس کے حکام کی بھرپورشرکت،اورتواور بعض جگہوں پر فی میل سکولوں کے راستوں پربھی قبضہ مافیا کے مکمل پنجے گاڑنے پر اجلاس میں سخت برہمی کااظہار، قبضہ مافیا کے چنگل سے سرکاری حدود واراضیات واگزار کرنا ناگزیر ہوچکا، فوری سروے، ڈی مارکیشن اورقانونی نوٹسز کے بعد جلد بھرپور کاروائی کے آغاز پر اتفاق رائے کا اظہار کیا گیا۔ اے سی لاہور گوہر علی خان کی سربراہی میں جمعہ کے روز منعقدہ اس اجلاس میں تحصیل ناظم سہیل خان، نگران تحصیل نائب ناظم محمد اسدزمان، ڈی ایس پی پشم گل خان،ٹی ایم اونورالامین، ایڈیشنل اے سی شیررحمن، انکروچمنٹ آفیسر فرمائش گل، ٹی او آر مسیح الزمان،تحصیلدار نواب خاب، محکمہ تعلیم کے حکام غزیٰ باچا، محمد عابد، جمشیدخان، سی این ڈبلیو کے حکام انورعلی، عمران اللہ خان، محکمہ ایری گیشن کے حکام نظرمحمد، یعقوب خان اورپبلک ہیلتھ کے حکام میں انتظارمحمد، محمدنظیف وغیرہ شامل تھے اس موقع پر تمام شرکاء اجلاس نے اپنے اپنے خیالات کااظہار کیا اجلاس میں یہ بھی انکشاف ہوا کہ تورڈھیر اورجہانگیرہ میں ایک ایک فی میل گورنمنٹ سکول ایسے بھی ہیں جنکے سرکاری کاغذات میں راستے تو ہیں مگر موقع پر قبضہ مافیا نے اپنی مکمل گرفت میں لے رکھے ہیں اور طالبات کھیتوں کی پگڈنڈیوں پر سکول آنے جانے پر مجبور ہیں اس موقع پر اے سی گوہر علی خان کا کہنا تھا کہ قبضہ کی گئی اراضیات مختلف محکموں کی ملکیتیں ہوتی ہیں جس میں سی این ڈبلیو، ایری گیشن، محکمہ تعلیم، محکمہ کے پی ایچ اے اور پبلک ہیلتھ وغیرہ اپنا اپنا ریکارڈ لاکرٹی ایم اے اور ریونیورریکارڈ ہم دینگے اجلاس میں اس مقصد کیلئے ایک کمیٹی تشکیل دیدی گئی جسمیں ٹی ایم اے کی جانب سے فرمائش گل، پبلک ہیلتھ سے انتظارمحمد، تحصیلدار لاہور نواب خان، ایری گیشن سے نظرمحمد، اوریعقوب خان جبکہ سی این ڈبلیو سے انورعلی شامل ہیں اے سی گوہر علی خان کامزید کہنا تھا کہ فوری طور مختلف محکموں کی سرکاری اراضیات کا سروے اور ڈی مارکیشن ہونگے جسکے بعد قبضہ مافیاکو دوبار ایک ایک ہفتہ کے قانونی نوٹسز جاری ہونگے اگر پھر بھی قبضہ مافیا نے تعاون کرکے ازخودقبضہ نہ چھوڑا تو ہیوی مشینری کیذریعے بھرپور آپریشن ہوگا جس پر آنے والے اخراجات قبضہ مافیا سے وصول کی جائیگی تاہم جس محکمہ کی اراضیات واگزارکرانی ہونگی مشینری کی فراہمی اس محکمہ کی ذمہ داری ہوگی جس پر تحصیل ناظم سہیل خان نے یہ بھی یقین دہانی کرائی کہ آپریشن کے آغازمیں تاخیر نہیں ہونی چاہیے مشینری کی فراہمی ہم کرائیں گے اور جس جس جگہ پہلے سے ڈی مارکیشن اور قانونی نوٹس کے مراحل سے بھی گزر چکے ہیں وہاں پر تو فوری طور کاروائی ہونی چاہیے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر