مہمند ایجنسی میں لوڈشیڈنگ کیخلاف قبائل سراپا احتجاج

مہمند ایجنسی میں لوڈشیڈنگ کیخلاف قبائل سراپا احتجاج

مہمند ایجنسی ( نمائندہ پاکستان ) مہمند ایجنسی واپڈا اہلکاروں کی من مانیوں سے عوام عاجز آگئے۔ لوڈ شیڈنگ اور لوڈ منیجمنٹ کا دورانیہ مختص نہیں، جہاں مرضی کاٹ لیتے ہیں۔ جو لائن منظور نظر ہو چالو رکھتے ہیں۔ شکایات اور ایمرجنسی اطلاع کیلئے کوئی طریقہ کار نہیں۔ جس کی وجہ سے کئی جانیں لقمہ اجل بنی ہے۔ بار بار عوامی مطالبات اور احتجاجوں کے باؤجود تبادلہ نہ ہونے سے متعلقہ اہلکار برسوں سے براجمان۔ عوامی حلقوں کی جانب سے واپڈا اور ٹیسکو کا قبلہ درست کرنے کا مطالبہ۔ تفصیلات کے مطابق مہمند ایجنسی میں شدید گرمی میں لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ ایک دفعہ پھر بڑھا دیا گیا ہے۔ واپڈا مہمند ایجنسی اور ٹیسکو کے اہلکار روزانہ سرکاری گاڑیوں میں آتے جاتے مصروف نظر آتے ہیں مگر بجلی کی ناروا اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کی تکالیف سہنا عوام کا مقدر بن گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق واپڈا اہلکاروں کا محور زیادہ تر ماربل اور دیگر فیکٹریاں ہیں۔ جہاں سے ذرائع آمدن کے مواقع ہو ۔ اس کیلئے عام لوگوں کی بجلی فالٹ اور خرابی کو پس پشت ڈال کر کئی روز انتظار کراتے ہیں۔ اس کے علاوہ لوڈ شیڈنگ اور لوڈ منیجمنٹ کا واضح ٹائم فریم نہیں۔ اور نہ ہی تمام علاقوں کیلئے بجلی کی فراہمی میں کوئی توازن ہے۔ قلیل وقت کی بجلی بھی بڑھا اور گھٹا کر دیا جاتا ہے جس سے لوگوں کے ماہانہ لاکھوں روپے کے قیمتی الیکٹرانک سامان جل جاتا ہے۔ واپڈا مہمند ایجنسی اور ٹیسکو مہمند کے پاس بروقت رابطے کا بھی کوئی نظام نہیں جس کی وجہ سے ایمرجنسی کی اطلاع بھی وصول نہیں کی جاتی۔ یہی وجہ ہے کہ واپڈا کی لا پرواہی سے کرنٹ لگنے کے واقعات میں شرح اموات میں اضافہ ہوا ہے۔ گزشتہ کئی سالوں سے عوامی اور سیاسی احتجاجوں میں قبضہ جمانے والے اہلکاروں پر کرپشن اور من مانی کے الزامات پر ،اُن کے تبادلوں کے مطالبات ہو رہے ہیں مگر اس کے باؤجود وہ بدستور ڈیوٹی پر موجود ہیں۔ عوامی حلقوں نے مطالبہ کیا ہے کہ سالہا سال سے براجمان اہلکاروں کو تبدیل کر کے ان کی جگہ ایماندار عملہ تعینات کیا جائے۔ اور عوام کو بجلی کا واضح ٹائم فریم دیا جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر