پاکستان میں اگر نچلی سطح پر تربیت دی جائے تو اچھے فٹبالر پیدا ہوسکتے ہیں، برازیلین فٹ بال کوچ روملڈو سانچز

پاکستان میں اگر نچلی سطح پر تربیت دی جائے تو اچھے فٹبالر پیدا ہوسکتے ہیں، ...
پاکستان میں اگر نچلی سطح پر تربیت دی جائے تو اچھے فٹبالر پیدا ہوسکتے ہیں، برازیلین فٹ بال کوچ روملڈو سانچز

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

حیدر آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن ) برازیلین فٹ بال کوچ روملڈو سانچزنے کہا ہے کہ جب پاکستان میں کرکٹ اچھا کھیلا جاسکتا ہے تو فٹبال کیوں نہیں،اگر نچلی سطح پر تربیت دی جائے تو اچھے فٹبالر پیدا ہوسکتے ہیں، حیدرآباد میرے آبائی علاقے کی طرح ہے، پاکستان میں آکر گھرکی طرح محسوس کررہاہوں ان خیالا ت کا اظہار انہوں حیدر آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا ۔

انہوں نے کہا کہ اگر پلان کے تحت کام ہو اور گھر والوں کی سپورٹ ہو تو یہی بچے میسی اور رونالڈو بن سکتے ہیں،ہر چیز کو مکمل کرنے کی لیے ایک پلان کی ضرورت ہوتی ہے، جب پاکستان میں اچھی کرکٹ کھیلی جار ہی ہے تو یہاں اچھا فٹبال کیوں نہیں کھیلا جا سکتا میرا خیا ل میں اگر ان بچوں پر توجہ دی جائے اور باقاعد ہ طریقے سے رہنمائی کی جائے تو یہی بچے میسی اور رونالڈو بن سکتے ہیں یہ کہیں پر بھی نہیں ہو تا کہ لوگ سیکھ کر پیدا ہوتے ہیں اس سب کے لئے ماحول پید ا کرنا پڑتا ہے انہوں نے کہا کہ میرے یہاں آنے کا مقصد فٹبال کو فروغ دیناہے اور میری خواہش ہے کہ ہم اس ملک میں بھی فٹبالر دیکھیں اور ہر کھیل کے میدان میں فٹبال کھیلا جائے اور دنیا میں پاکستان بھی اپنا ایک نام متعارف کروائے ۔

برازیلین فٹ بال کوچ روملڈو سانچزنے کہا کہ حیدرآباد میرے آبائی علاقے کی طرح ہے اور پاکستان میں آکر گھرکی طرح محسوس کررہاہوں اور یہاں اتنا پیار اور عزت مل رہی ہے کہ یہاں کا ہی ہو کر رہ جانے کو جی چاہ رہا ہے انہوں نے کہا کہ اگر پاکستان میں فٹبال کے شعبے میں کام کیا جائے تو بہت ساری کامیابیاں حاصل کی جاسکتی ہے ۔

مزید : کھیل