ہائی کورٹ نے ماتحت عدالتوں کے تمام ججوں کے اثاثہ جات کی تفصیلات طلب کرلیں

ہائی کورٹ نے ماتحت عدالتوں کے تمام ججوں کے اثاثہ جات کی تفصیلات طلب کرلیں
ہائی کورٹ نے ماتحت عدالتوں کے تمام ججوں کے اثاثہ جات کی تفصیلات طلب کرلیں

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب بھر کی ماتحت عدالتوں کے ججوں کے اثاثہ جات اور مالی سال2016-17ءکی آمدنی اورخرچ کی تفصیلات طلب کرلیں۔

فورٹریس اسٹیڈیم میں جھولاگرنے سے دو افراز زخمی ہو گئے

چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ کی منظوری کے بعد رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے پنجاب بھر کے سیشن ججوں سمیت تمام جوڈیشل افسروں کو بھجوائے گئے مراسلے میں انہیں 31جولائی تک تفصیلات فراہم کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔مراسلہ میں کہا گیا ہے کہ پنجاب بھر کے سیشن جج، ایڈیشنل سیشن جج، سینئر سول اور سول ججز اپنی منقولہ، غیر منقولہ جائیدادوں اور اپنے خاندان کے اثاثوں کی تفصیلات لاہور ہائیکورٹ کو فراہم کریں، مراسلے میں پنجاب کے تمام جوڈیشل افسروں حکم دیا گیا ہے کہ وہ اپنے بنک اکاﺅنٹس کی سٹیٹمنٹس بھی ہائیکورٹ کو بھجوائیں، جوڈیشل افسروں کو یہ حکم بھی دیا گیا ہے کہ وہ سرکاری رہائش گاہوں کے یوٹیلٹی بلوں اور کرایوں کے بقایا جات کی ادائیگیوں کے سرٹیفکیٹس بھی فراہم کریں، مراسلے میں واضح کیا گیا ہے کہ 15مارچ کو بھی جوڈیشل افسروں سے اثاثوں کی تفصیلات طلب کی گئی تھیں لیکن اکثر جوڈیشل افسروں کی جانب سے اثاثوں کی تفصیلات فراہم نہیں کی گئیں ،پنجاب کی ماتحت عدلیہ کے تمام جج 31جولائی تک اپنے تمام اثاثوں کی تفصیلات لاہور ہائیکورٹ کو بھجوائیں جبکہ پہلے اثاثوں کی تفصیلات فراہم کرنے والے جوڈیشل افسروں پر اس مراسلے کا اطلاق نہیں ہو گا ۔

مزید : لاہور