لاہور ہائی کورٹ ججز گیٹ کے سامنے رکشہ کو آگ لگانے کے واقعہ کی بنیاد پر عدالت عالیہ میں درخواست دائر

لاہور ہائی کورٹ ججز گیٹ کے سامنے رکشہ کو آگ لگانے کے واقعہ کی بنیاد پر عدالت ...
لاہور ہائی کورٹ ججز گیٹ کے سامنے رکشہ کو آگ لگانے کے واقعہ کی بنیاد پر عدالت عالیہ میں درخواست دائر

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائیکورٹ کے ججز گیٹ کے سامنے رکشہ کو لگائی جانے والی آگ کے واقعہ کی بنیاد پر لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کر دی گئی ہے۔

ہائی کورٹ نے ماتحت عدالتوں کے تمام ججوں کے اثاثہ جات کی تفصیلات طلب کرلیں

یہ درخواست جوڈیشل ایکٹوازم پینل کے سربراہ اظہر صدیق ایڈووکیٹ کی جانب سے دائر کی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ٹریفک وارڈنز ٹریفک کو کنٹرول کرنے کی بجائے حکومتی آمدن اکٹھا کرنے کے ایجنٹ کے طور پر کام کر رہے ہیں۔آئین کے آرٹیکل 10(اے )کے تحت کسی بھی شہری کے خلاف شفاف ٹرائل کے بغیر کارروائی نہیں کی جا سکتی۔ٹریفک وارڈنز کی جانب سے کئے جانے والے چلان یکطرفہ طور پر ہوتے ہیں جو کہ آئین کی سنگین خلاف ورزی ہے۔ہائیکورٹ ججز گیٹ کے سامنے رکشہ کو لگائی جانے والی آگ ناانصافی کے واقعہ کی ایک مثال ہے،ٹریفک وارڈنز کی ناانصافیوں کے ہاتھوں مجبور ہو کر رکشہ ڈرائیورز آئے روز اپنے رکشوں کو آگ لگارہے ہیں۔درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ ججز گیٹ کے سامنے پیش آنے والے واقعہ میں ملوث ٹریفک وارڈن کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی کا حکم دیتے ہوئے بلاجواز چالانوں کی روک تھام کا بھی حکم دیا جائے۔

مزید : لاہور