دنیا کا بد قسمت ترین جوڑا ،جس دن شادی تھی طوفان آ گیا اور پھر ہنی مون منانے پہنچے تو لینڈ کرتے ہی ایک دم ۔۔۔جان بچانا مشکل ہو گیا

دنیا کا بد قسمت ترین جوڑا ،جس دن شادی تھی طوفان آ گیا اور پھر ہنی مون منانے ...
دنیا کا بد قسمت ترین جوڑا ،جس دن شادی تھی طوفان آ گیا اور پھر ہنی مون منانے پہنچے تو لینڈ کرتے ہی ایک دم ۔۔۔جان بچانا مشکل ہو گیا

  

سڈنی(نیوز ڈیسک) سچ کہتے ہیں کہ بعض اوقات بدقسمتی کسی کا گھر دیکھ لیتی ہے، یقین نہ آئے تو مصیبت کے مارے اس نوجوان جوڑے کو دیکھ لیجئے جن کی شادی کی تقریب کو سمندری طوفان بہالے گیا اور جب بیچارے ہنی مون منانے کیلئے یونان گئے تو وہاں زلزلہ آ گیا۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق آسٹریلوی خاتون کرسٹیان اور ان کے شوہر رینے زیلوز کا تعلق سڈنی شہر سے ہے۔ جب مارچ میں ان کی شادی ہوئی تو سمندری طوفان ڈیبی ریاست کوئنز لینڈ پر قیامت بن کر ٹوٹا اور وسیع پیمانے پر تباہی مچائی۔ کرسٹیان اور رینے کی شادی کی تقریب بھی اس سمندری طوفان کی وجہ سے درہم برہم ہوگئی۔

اس صدمے کو بھلانے کیلئے دونوں نے یونان کے ایک پرفضا مقام پر ہنی مون پر جانے کا فیصلہ کیا۔ بیچارے رات کے وت ہوٹل کے کمرے میں مزے کی نیند سورہے تھے کہ اچانک زمین لرزنے لگی اور موت کے خوف سے ہر کسی نے ہوٹل کے کمروں سے باہر دوڑ لگادی۔ رینے نے اس وقت کی منظر کشی کرتے ہوئے بتایا ”مجھے پہلے ایک ہلکا جھٹکا محسوس ہوا اور اس کے بعد ایک زور کا جھٹکا لگا۔ اس کے بعد تو کئی جھٹکے پے درپے آئے۔ ہمیں موت اپنی آنکھوں کے سامنے نظر آنے لگی اور ہم نے باہر کی جانب دوڑ لگا دی۔ وہ رات ہم نے ہوٹل کے باہر کھلے آسمان کے نیچے گزاری۔ یوں لگ رہا تھا کہ سارا شہر ہی اس رات سڑکوں کے کنارے اور پارکوں میں تھا کیونکہ ہر کوئی خوفزدہ تھا کہ زلزلہ دوبارہ آسکتا ہے۔ بعد میں ہمیں پتہ چلا کہ یہ 6.7 شدت کا زلزلہ تھا جس نے یونان کے بڑے حصے کو ہلا کر رکھ دیا تھا۔ اب ہم اس بات پر شکر ادا کررہے ہیں کہ شادی اور پھر ہنی مون کے موقع پر نازل ہونے والی آفتوں میں زندہ سلامت بچ نکلے ہیں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس