بلوچستان کے مزید 3اضلاع میں انٹرنیٹ سروس معطل ،تعداد 6ہوگئی

بلوچستان کے مزید 3اضلاع میں انٹرنیٹ سروس معطل ،تعداد 6ہوگئی

اسلام آباد (آئی این پی )پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی(پی ٹی اے)نے وزارت داخلہ کی ہدایت پر عام انتخابات 2018 کے دوران بلوچستان کے مزید 3 اضلاع میں موبائل انٹرنیٹ سروس معطل کرنے کا نوٹیفیکیشن جاری کردیا جس کے بعد صوبے میں سروس سے محروم اضلاع کی تعداد 6 ہوگئی۔پی ٹی اے کی جانب سے جاری نوٹی فیکیشن میں کہا گیا ہے کہ وزارت داخلہ کی ہدایت پر تین اضلاع پشین، قلعہ عبداللہ اور مستونگ میں 20 جولائی سے 31 جولائی 2018 تک موبائل ڈیٹا انٹرنیٹ سروس بند رہے گی۔اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ دیگر تین اضلاع آواران، کیچ اور قلات میں فروری 2017 سے ڈیٹا سروس معطل ہے۔پی ٹی اے کے مطابق موبائل انٹرنیٹ سروس بند ہونے کی وجہ سے الیکشن کمیشن کی رزلٹ ٹرانسمیشن سسٹم (آر ٹی ایس)سروس متاثر ہو گی۔حکومت کے اس اقدام سے بلوچستان کے متعلقہ 6 اضلاع میں موبائل انٹرنیٹ سروس بند ہونے سے الیکشن کمیشن کی ووٹر تصدیقی سروس بھی متاثر ہو گی۔علاوہ ازیں چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے بلوچستان کے 6 اضلاع میں انٹرنیٹ کی سہولت کو معطل کرنے کا نوٹس لیتے ہوئے سینیٹ سیکرٹریٹ کو حکم دیا ہے کہ وہ پی ٹی اے کو کہہ دے کہ سروس فورا کھول دی جائے ۔سینیٹ کے گزشتہ روز ہونیوالے اجلاس میں بلوچستان سے رکن سینیٹ اشوک کمار نے توجہ دلائی کہ بلوچستان میں الیکشن تک انٹرنیٹ کی سہولت ختم کر دی گئی ہے اس سے ان کو مشکلات کا سامنا ہے جس پر چیئرمین سینیٹ نے حکم جاری کیا کہ فوراً سروس بحال کی جائے۔سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے الیکشن مانیٹرنگ اور سکیورٹی جنرل الیکشن 2018ء اور قائمہ کمیٹی برائے اطلاعات و نشریات کی سنسرشپ پررپورٹ سینیٹ میں پیش کی گئی۔

انٹر نیٹ سروس معطل

مزید : علاقائی