مفتی اعطم ہند محمد اختر رضا خان بریلوی کی نماز جنازہ آج ادا کی جائیگی

مفتی اعطم ہند محمد اختر رضا خان بریلوی کی نماز جنازہ آج ادا کی جائیگی

  

 نئی دہلی(خصوصی رپورٹ)عالم اسلام کے ممتاز مفکر اور روحانی شخصیت اعلی حضرت امام احمد رضا بریلوی کے پڑپوتے اورجانشین، مفتی ا عظم ہند حضرت مولانا مفتی محمد اختر رضا خان بریلوی کی نماز جنازہ آج بروز اتوار بعد نماز ظہر اسلامیہ انٹر کالج بریلی میں ادا کی جاے گی اور تدفین ازہری گیسٹ ہاؤس میں ہوگی، ان کی نماز جنازہ میں شرکت کیلئے ہندوستان بھر سے لاکھوں افراد شریک ہوں گے۔اعلی حضرت امام احمد رضا بریلوی کے پڑپوتے اورجانشین مفتی اعظم ہند تاج الشریعہ حضرت مولانا مفتی محمد اختر رضا خان بریلوی جمعہ کے روز خالق حقیقی سے جا ملے تھے ،عالم اسلام کی عظیم شخصیت ایک طویل عرصے سے علیل تھے، مولانا محمد اختر رضا خان کے والد محمد ابراہیم خان، امام احمد رضا خان کے صا حبز ادے محمد حامد رضا خان کے فرزند ارجمند تھے۔2 فروری 1943ء کو بریلی میں پیدا ہونیوالے مفتی محمد اختر رضا خان بریلوی مکتبہ فکر کی معروف شخصیت اور بھارت میں مفتی اعظم کے نام سے شناخت رکھتے تھے والے، اردن کی رائل اسلامک سوسائٹی کی طرف سے دنیا کے 500 بااثر ترین مسلمانوں کی جاری کردہ فہرست میں ان کا نام بائیسویں نمبر پرتھا، 500 بااثر اور انتہائی طاقتور مسلم شخصیات کی فہر ست میں 22 واں مقام حاصل کرنیو الے مفتی اختر رضا خاں کم و بیش 5 ہزار فتاویٰ تحریر کرچکے ہیں جو ایک اعزاز سے کم نہیں ، انکے 5 ہزار فتا ویٰ میں نس بندی کیخلاف دیا گیا ان کا فتویٰ بہت ہی اہمیت کا حامل ہے ، 1975 میں اسوقت کی ہندوستانی وزیر اعظم اندرا گاندھی نے ملک میں نس بندی کو لازمی قرار دیا تھا جس کیخلاف مفتی اختر رضا خاں نے فتویٰ جاری کرتے ہوئے اس طبی عمل کو شریعت کیخلاف عمل قرار دیا تھا۔ بریلوی مکتب فکر کے اس عالم حق نے 50 سے زائد اسلامی کتابیں تصنیف کی ہیں،ان کی نعتوں پر مشتمل کتاب سفینہ بخشش کا 3 زبانوں میں ترجمہ ہوچکا ہے جبکہ ان کی فتووں پر مشتمل کتاب کا نام اظہار ا لفتاویٰ ہے یہ کتاب بھی دنیا کی کئی زبانوں میں شائع ہو چکی ہے۔ مرحوم معرو ف اسلامک یونیورسٹی جامعہ الازہرمصر سے فارغ التحصیل تھے، انہوں نے 2000ء میں بھارتی صوبے اترپردیش کے شہر بریلی میں اسلامی تعلیمات کیلئے جماعت الرضا کے نام سے ایک اسلامک سینٹر بھی قائم کیا۔

مزید :

صفحہ اول -