فواد حسن فواد مزید 14روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

فواد حسن فواد مزید 14روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

لاہور(نامہ نگار )احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کے سابق پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد کو مزید 14روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کر دیاہے۔عدالت نے فواد حسن فواد کے طبی معائنے کے لئے بورڈ کی تشکیل اور تنخواہوں کی بحالی کی درخواستوں پر نیب سے آئندہ سماعت پر جواب طلب کر لیاہے۔احتساب عدالت کے جج منیر احمد نے کیس کی سماعت کی، تفتیشی افسر نے فواد حسن فواد کو سخت سکیورٹی میں عدالت کے روبرو پیش کیا، تفتیشی افسر نے فواد حسن فواد کے مزید 15 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ ملزم فواد حسن فواد نے بطور سیکرٹری امپلی مینٹیشن برائے وزیر اعلیٰ پنجاب اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کیا، ملزم نے پنجاب لینڈ ڈویلپمنٹ کمپنی کے چیف ایگزیکٹو طاہر خورشید کو آشیانہ اقبال پراجیکٹ کا کنٹریکٹ معطل کرنے کے غیر قانونی احکامات جاری کئے اور سرکاری طور پر کنٹریکٹ حاصل کرنیوالے چودھری لطیف اینڈ سنز کا ٹھیکہ معطل کرایا، ملزم نے کاسا کمپنی کو غیر قانونی ٹھیکہ دلانے کے لیے اختیارات کا ناجائز استعمال کیاجس کی بناء پرحکومت کو 60لاکھ روپے جرمانہ ادا کرنا پڑا،ملزم فواد حسن فواد کے غیر قانونی اقدامات پراجیکٹ کے غیر ضروری التواء کا باعث بنے اور پراجیکٹ کی قیمت میں اربوں روپے کا اضافہ بھی ہوا، ملزم کے وکیل نے کہا کہ فواد حسن فواد پر بے بنیاد الزامات عائد کئے گئے ،انہیں جسمانی ریمانڈپر نیب کے حوالے نہ کیا جائے تاہم عدالت نے وزیراعظم کے سابق پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد کو مزید 14روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کر دیاہے۔عدالت نے فواد حسن فواد کے طبی معائنے کے لئے بورڈ کی تشکیل اور تنخواہوں کی بحالی کی درخواستوں پر نیب سے جواب طلب کر لیاہے، گزشتہ روز ملزم کو گلگت بلتستان سپریم کورٹ کے روبرو پیش کرنے کے باعث احتساب عدالت پیش نہ کیا جا سکا تھا۔

فواد ریمانڈ

مزید : صفحہ اول