آرمی چیف سے اپیل ہے کہ اپنے اداروں کو کنٹرول کریں:یاسین آزاد

آرمی چیف سے اپیل ہے کہ اپنے اداروں کو کنٹرول کریں:یاسین آزاد

کراچی (ا سٹاف رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اورسابق صدر سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن یاسین آزاد ایڈوکیٹ نے کہا ہے کہ انتخابات کے نتائج تسلیم نہیں کیے گئے تو آئینی بحران پیدا ہوگا ۔آرمی چیف سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ اپنے اداروں کو کنٹرول کریں ۔نگراں حکومت اپنی حدود میں رہے ۔علی ظفر کے چار پانچ دن رہ گئے ہیں ،وہ ایجنسیوں کے کہنے پر نہ چلیں ۔مریم نواز جمہوریت پر شب خون مارنے والوں سے مفاہمت نہیں کریں گی ۔ہائی جیکنگ کے مقدمے میں سزا سنانے والی قوتیں ہی نوازشریف کے خلاف موجودہ فیصلے کے پیچھے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کو سابق وزیر تعلیم پنجاب رانا مشہود احمد ،مسلم لیگ (ن)سندھ کے صدر شاہ محمد شاہ ،جنرل سیکرٹری سینیٹر سلیم ضیا ،مسلم لیگ (ن)بزنس فورم کے صدر اشتیاق بیگ کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر امان اللہ پراچہ ،جاوید خالد رانا سمیت دیگر شخصیات نے مسلم لیگ (ن) میں شمولیت اور پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے امیدوار افضل خان نے شہبازشریف کے حق میں دستبردارہونے کا اعلان کیا ۔یاسین آزاد ایڈوکیٹ نے کہا کہ اپنی 40سالہ پیشہ وارانہ زندگی میں نوازشریف کے مقدمے جیسا کمزور فیصلہ نہیں دیکھا ۔ہائی جیکنگ کے مقدمے میں سزا سنانے والی قوتیں ہی نوازشریف کے خلاف موجودہ فیصلے کے پیچھے ہیں۔اسلام آباد ہائی کورٹ سے اپیل ہے کہ وہ نوازشریف کی اپیل کی روزانہ کی بنیاد پر سماعت کرے ۔انہوں نے کہا کہ نگراں حکومت اپنی حدود میں رہے۔علی ظفر کے چار پانچ دن باقی رہ گئے ہیِ،وہ ایجنسیوں کے کہنے پر نہ چلیں ۔یاسین آزاد نے کہا کہ شفاف الیکشن ہوئے تو مسلم لیگ (ن) حکومت بنائے گی۔نوازشریف کو جمعہ کی نماز تک پڑھنے نہیں دی گئی۔ایجنسیوں کو کنٹرول نہیں کیا گیا تو قومی ادارے کی ساکھ خراب ہونے کی ذمہ داری بھی ان ہی کی ہوگی۔ الیکشن نتائج تسلیم نہیں کئے گئے تو آئینی بحران پیدا ہو جائے گا۔(ن) لیگ سمیت دیگر جماعتیں اسکو برداشت نہیں کریں گی ۔آرمی چیف سے اپیل ہے کہ وہ اپنے اداروں کو کنٹرول کریں۔انہوں نے کہا کہ یم نواز جمہوریت پر شب خون مارنے والوں سے مفاہمت نہیں کریں گی۔میں نے جیل میں میاں صاحب کو باہمت دیکھا ہے ۔مریم اور کیپٹن صفدر بھی ٹھیک ہیں ۔میاں نواز شریف کو ایسے سیل میں رکھا گیا ہے جس میں دہشت گردوں کو رکھا جاتا ہے ۔نواز شریف کے فیصلے میں لکھا ہوا ہے کرپشن ثابت نہیں ہوئی ،ان کو دی جانے والی سزا غلط ہے ۔رانا مشہوداحمد نے کہا کہ ایک لاڈلے کو نوازنے کے لئے حالات پیدا کئے جا رہے ہیں،جو گھر نہیں چلا سکتا اسے وزیراعظم بنا رہے ہیں،خدارا ووٹ کو عزت دیں لوگ شفاف الیکشن چاہتے ہیں،عزت انگوٹھے کو دیں انگلی کو نہیں۔تمام سروے بتا رہے ہیں کہ مسلم لیگ (ن) جیت رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ13 جولائی کو نوازشریف کے استقبال کا بلیک آؤٹ کیا گیا،سندھ، کے پی کے اور بلوچستان کے قافلوں کو لاہور جانے سے روکاگیا،،میڈیا پر قدغن لگائی گئی،عالمی میڈیا پاکستان کے میڈیا پر پابندیوں کا بتا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ بہت سی جماعتیں ہم سے رابطے میں ہیں۔لاڈلے کوعوام نے ناکام جلسوں کی صورت میں فیصلہ سنا دیا ہے۔مسلم لیگ (ن)پنجاب سے 110 نشستیں جیتے گی ۔رانا مشہود نے کہا کہ پنجاب کے نگراں وزیر اعلی غیرجانبدار نہیں رہے،نگراں وزیراعلیٰ کے خلاف کارروائی کیوں نہیں کی جا رہی،کارکنوں کی گرفتاری پر عدالتوں کو ازخود نوٹس لینا چاہئے،ہمیں پانچ سال کام نہیں کرنے دیا گیا۔3 بارمنتخب ہونے والے وزیر اعظم کے ساتھ ایسا سلوک کیا گیا۔شیخ رشید نے عدلیہ پر الزام لگایا اس پر بھی عدلیہ نے ایکشن نہیں لیا۔انہوں نے کہا کہ نوازشریف کی اپیل کی سماعت روزانہ کی بنیاد پر ہونی چاہئے۔نوازشریف پرتمام الزامات غلط ثابت ہو گئے ہیں۔25 جولائی فیصلے کی گھڑی ہے۔عوام غلیظ لوگوں کو مسترد کردیں گے۔مسلم لیگ (ن)سندھ کے صدر شاہ محمد شاہ نے کہا کہ اس وقت جو ہورہاہے وہ سب کے سامنے ہے ۔غیر جمہوری قوتیں عوام کے سامنے بے نقاب ہوگئی ہیں ۔پاکستان مسلم لیگ (ن)بزنس فورم کے صدر اشتیاق بیگ نے کہا کہ ملک کی معیشت انتہائی خراب ہے۔تجارتی خسارے میں اضافہ ہورہا ہے ۔ملکی زرمبادلہ کے ذخائر کم ہورہے ہیں ۔بنگلہ دیشی اور نیپالی روپیہ پاکستان روپے کے مقابلے میں مضبوط ہورہا ہے ۔روپے کی قدر دن بدن گرتی جارہی ہے۔ہمارے پاس ملکی معیشت کو مضبوط کرنے کے لیے سوائے شفاف انتخابا تکے کوئی راستہ نہیں ہے ۔اگر ایسا نہیں ہوا تو پاکستان دیوالیہ ہوجائے گا ۔کراچی میں قیام امن کا سب سے زیادہ فائدہ بزنس کمیونٹی کو پہنچا ہے ۔نواز شریف نے 11ہزار میگاواٹ بجلی کی پیداوار میں اضافہ کیا ہے۔ہم انتخابات میں کامیابی حاصل کرکے کراچی کے مسائل حل کریں گے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر