اغوا ہونے والے صحافی مطیع اللہ جان 12 گھنٹے بعد گھر پہنچ گئے

    اغوا ہونے والے صحافی مطیع اللہ جان 12 گھنٹے بعد گھر پہنچ گئے

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) اسلام آباد سے اغوا ہونے والے سینیئر صحافی مطیع اللہ جان 12 گھنٹے بعد اپنے گھر پہنچ گئے۔ صحافی اعزاز سید نے مطیع اللہ جان کی بازیابی کے بعد ان سے ملاقات کی تصویر ٹوئٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ انہیں اپنے دوست سے مل کر انتہائی خوشی ہورہی ہے۔ انہوں نے مطیع اللہ جان کو خوش آمدید کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ 12 گھنٹے اغوا رہنے کے بعد بازیاب ہوگئے ہیں۔رپورٹس کے مطابق اغوا کاروں نے سینیئر صحافی کو اسلام آباد سے 70 کلومیٹر دور فتح جنگ کے علاقے میں چھوڑا۔خیال رہے کہ مطیع اللہ جان گزشتہ صبح اسلام آباد سے لاپتہ ہوگئے تھے اور ان کی اہلیہ کے مطابق ان کے شوہر کی گاڑی جی سکس میں ان کے سکول کے پاس کھڑی پائی گئی تھی۔اہلیہ نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ ’مجھے بتایا گیا کہ میرے شوہرکو کچھ لوگ زبردستی اپنے ساتھ لے گئے‘۔مطیع اللہ جان کی گمشدگی پر ایمنسٹی انٹرنیشنل، ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان اور ملک بھر کی صحافتی تنظیموں نے احتجاج کرتے ہوئے ان کی بازیابی کا مطالبہ کیا تھا۔مطیع اللہ جان کے بھائی نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں ان کی بازیابی کے لیے درخواست بھی دائر کی تھی جس پر عدالت نے سیکرٹری داخلہ، چیف کمشنر اور آئی جی پولیس کو نوٹس جاری کرتے ہوئے حکم دیا تھا کہ مطیع اللہ جان کو بازیاب نہیں کرایا جائے بصورت دیگر فریقین کل ذاتی حیثیت میں پیش ہوں۔

صحافی مطیع اللہ جان

مزید :

صفحہ اول -