پنجاب اسمبلی، ارکان کا سیکرٹری خورا ک کی عدم شرکت پر احتجاج، 4قرار دادیں منظور

پنجاب اسمبلی، ارکان کا سیکرٹری خورا ک کی عدم شرکت پر احتجاج، 4قرار دادیں ...

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں سیکرٹری خوارک کی عدم موجودگی پر چیئرمین برہم،میاں شفیع کا سیکرٹری خوراک کی عدم موجودگی پر چیف سیکرٹری کو مراسلہ بھیجنے کی ہدایت،آدھا گھنٹہ انتظار کے باوجود سیکرٹری خوراک اسمبلی نہ پہنچ سکے،خلیل طاہر نے کہاسیکرٹری کا موجود نہ ہونا حکومت کی بے بسی ہے،علیم خان نے کہا سیکرٹری اجازت لے کر گئے جس دن بے بسی ہو گی اپنی سیٹ چھوڑ دوں گا،علیم خان کی ایوان سے معذرت وقفہ سوالات ملتوی،شیخوپورہ میں ٹرین حادثے میں سیکھ یاتریوں کی ہلاکت پر تعزیتی قرارداد سمیت مفادعامہ کی قراردادیں منظور،سابق جسٹس سردار اسلم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے دعا،ایجنڈا مکمل ہونے پر پینل چیئرمین میاں شفیع نے اجلاس آج دوپہر دو بجے تک ملتوی کردیا۔پنجاب اسمبلی کا اجلاس چیئرمین میاں شفیع کی زیر صدارت ایک گھنٹہ پچاس منٹ تاخیر سے شروع ہوا۔اسمبلی کے ایجنڈے پر موجود محکمہ خوراک کے متعلق سوالوں کے جواب دینے کیلئے سیکرٹری خوراک کی عدم موجودگی پر وقفہ سوالات ملتوی کردیا گیا۔ لیگی رکن خلیل طاہر سندھو نے کہا سپیکر کی رولنگ ہے کہ محکمے کی سیکرٹری کی عدم موجودگی میں وقفہ سوالات شروع نہیں ہو سکتا۔علیم خان نے کہا سیکرٹری خوراک مجھ سے اجازت لے کر گئے انہوں نے وزیراعظم کے ساتھ گندم پر میٹنگ کرنی تھی اس لیے وہ اسلام آباد گئے ہیں۔ چیئرمین میاں شفیع نے کہا یہ ایوان سب سے زیادہ محترم ہے اس سے زیادہ اہم کوئی کام نہیں، وقفہ سوالات ملتوی کررہے ہیں۔میاں شفیع نے اسمبلی سیکرٹریٹ کو فورا چیف سیکرٹری کومراسلہ لکھنے کی ہدایت کردی۔بعدازراں مسلم لیگ (ن) کے رکن منیب الحق نے نقطہ اعتراض پر کہا حکومت نے شادی ہال بند کردیے ہیں جس کی وجہ سے لاکھوں لوگوں کا روزگار متاثر ہو گیا ہے۔وزیرقانون راجہ بشارت نے کہا شادی ہال ایسوسی ایشن کے لوگوں کی وزیر صنعت سے ملاقات ہوئی ہے،عید کے بعد شادی ہالزکو ایس او پیز کے تحت کھولنے کا مسئلہ حل ہو جائے گا۔بعدازراں شیخوپورہ ٹرین حادثہ میں سکھ یاتریوں کے جان بحق ہونے تعزیتی قرارداد منظورمتفقہ طور پر منظور کرلی گئی، قرارداد ق لیگ کی خدیجہ عمر نے پیش کی۔دوسری قرارداد بچوں کی ذہنی نشوونما مثبت سوچ کی عادت اپنانے کے لیے تعلیمی اداروں میں سائیکالوجی سنٹر اور کلاسز کا قیام عمل میں لانے کے قرارداد کثرت رائے سے منظور،قرارداد رکن اسمبلی سعدیہ سہیل نے پیش کی۔تیسری قرارداد لیگی رکن افتخار حسین نے پیش کی،بصیر پور ریلوے سٹیشن کے ساتھ مین بازار کے پھاٹک کی توسیع کے قرار متفقہ منظور کرلی گئی۔چوتھی قرارداد پی ٹی آئی کی خاتون رکن شعوانہ بشیر کی جانب سے پیش کی گئی کہ رنگ روڈ پر روزانہ کی بنیاد پر 90 روپے ٹیکس ادا کرنا پڑتا ہے، 200 روپے کا ماہانہ کارڈ جاری کیا جائے،یہ قرارداد بھی کثرت رائے سے منظور کرلی گئی۔بعدازراں ایجنڈا مکمل ہونے پر پینل چیئر مین میاں شفیع نے اجلاس آج دوپہر دو بجے تک ملتوی کردیا۔

پنجاب اسمبلی

مزید :

صفحہ آخر -