طوفانی بارش، چھتیں، دیواریں گرنے اور کرنٹ لگنے سے 20افراد جاں بحق، 40زخمی

  طوفانی بارش، چھتیں، دیواریں گرنے اور کرنٹ لگنے سے 20افراد جاں بحق، 40زخمی

  

لاہور،فیصل آباد، قصور،ننکانہ صاحب،جڑانوالہ،شرقپور شریف(کرائم رپورٹر، بیورو رپورٹ، نمائندہ خصوصی،نامہ نگار،نامہ نگار)طوفانی بارشوں سے صوبائی دارالحکومت لاہور سمیت مختلف شہروں میں چھتیں، دیواریں اور سائن بورڈ گرنے اور کرنٹ لگنے سے 20افراد جاں بحق اور 40سے زائد زخمی ہوگئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق لاہور میں تیز آندھی اور بارش سے سائن بورڈ گرنے اور کرنٹ لگنے سے 2 افراد جاں بحق جبکہ 15 سے زائد زخمی ہوگئے، جن کو طبی امداد کے لیے مقامی ہسپتالوں میں منتقل کردیا گیا ہے۔ مانگامنڈی کے علاقے میں کھمبے سے کرنٹ لگنے سے 30 سالہ نوجوان شیرازی بری طرح جھلس کر زخمی ہوگیا، اسے فوری طور پر تشویشناک حالت میں مقامی ہسپتال پہنچایا گیا جہاں پر ڈاکٹروں نے اسکی موت کی تصدیق کردی۔ کاہنہ میں پانی کی موٹر میں کرنٹ آجانے سے 40 سالہ شخص جھلس کر ہلاک ہوگیاجبکہ آندھی کے باعث سائن بورڈ گرنے سے ٹاؤن شپ کے علاقے میں 3 افراد زخمی ہوگئے۔ ہنجروال کے علاقے میں موٹر سائیکل سلپ ہونے سے 2 نوجوان زخمی ہوگئے۔ ہربنس پورہ میں ٹریفک حادثے میں 4 افراد زخمی ہوگئے جن کو امدادی ٹیموں نے طبی امداد کے لیے مقامی ہسپتال منتقل کردیا۔ شاہدرہ کے علاقے میں جنگلے میں کرنٹ آنے سے 20 سالہ نوجوان عرفان جھلس کر زخمی ہوگیا۔ فیروز پور روڈ پر دو موٹر سائیکلیں آپس میں ٹکرانے کے باعث2افراد زخمی ہوگئے۔ ملتان روڈ پر آندھی کے باعث چنگ چی رکشہ الٹ گیا جس کے نتیجے میں 3 افراد زخمی ہوگئے۔فیصل آباد کے علاقہ وڈیاں گنگنامیں شدید بارش کے باعث چھت گرنے سے ملبہ کے نیچے دب کر17سالہ سائرہ، اسکی بہن نوسالہ نسیم بی بی، اسکا بھائی تیرہ سالہ رضوان جاں بحق ہوگئے اورن انکی والد ہ 42سالہ نسرین، اٹھارہ سالہ ماریہ، آٹھ سالہ مناہل اور عزیز 45سالہ محمد حسین زخمی ہوگئے جن کو زخمی حالت میں ریسکیو1122کے اہلکاروں نے ہسپتال منتقل کردیاجبکہ تاندلیانوالہ کے نواحی چک دھوپ سٹریاں میں طوفانی موسلادھار بارش کے باعث تین کمروں کی چھتیں گرنے سے ملبہ کے نیچے دب کر فاطمہ، اسکی بیٹیاں سولہ سالہ جنت بی بی، اٹھارہ سالہ بشریٰ بی بی، تیرہ سالہ فرزانہ، اسکا بیٹا چودہ سالہ مہدی حسن اور قریبی عزیز تیرہ سالہ یاسراور دس سالہ خرم شہزاد جاں بحق ہوگئے ا ور ریسکیوعملہ نے کنیز اور فاطمہ کو ملبہ کے نیچے سے زخمی حالت میں نکال کر ہسپتال منتقل کردیاجن کی حالت مخدوش بتائی گئی ہے۔ چھا نگا ما نگا کے نوا ح بد ھو کی میں 25سالہ عا بد مو یشیو ں کی حو یلی سے مو یشی با ہر نکا ل رہا تھا کہ بو سید ہ چھت گر نے سے عا بد علی مو قع پر جاں بحق اس کے دو بھا ئی یو سف اور عمرا ن ز خمی ہو گئے چھینہ او تا ڑ میں مو یشیو ں کی حو یلی کی پرا نی چھت گر نے سے 50سا لہ محمد اسلم زند گی کی بازی ہا ر گیا۔ بٹہ منڈ ے چھا نگا ما نگا میں گھر کی چھت گرنے سے 70سا لہ رفیق اور 18سا لہ بو ٹا ذ یشا ن ز خمی ہو گئے چا ہ الغو وا لہ کھڈ یا ں میں اما نت کی چا ر بیٹیا ں اپنے گھر میں بیٹھی ہو ئی تھیں کہ اچا نک چھت گر نے سے ملبے تلے دب کر 14سا لہ شا ز یہ جا ں بحق فا طمہ، رخسا نہ اور شا فیہ شد ید ز خمی ہو گئیں۔سرا ئے مغل کے نوا ح گھمن کلا ں میں طفیل اپنے بیٹو ں کے ہمرا ہ گھر میں مو جو د تھا کہ مو ن سو ن کیو جہ سے گھر کی بو سید ہ چھت گر جا نے سے ملبے تلے دب کر اس کا گیا ر ہ سا لہ بیٹا عثما ن مو قع پرجا ں بحق طفیل اور اس کا دو سرا بیٹا علی احمد شد یدز خمی ہو گئے زخمیو ں کو طبی امدا د کے لیے مقا مہ ہسپتا لو ں میں پہنچا دیا گیا ہے۔ تھانہ کھرڑیانوالہ کی حدود مکوانہ کے نواحی علاقہ چک نمبر 210 ر۔ب لکھوانہ میں بارش کے باعث مکان کی خستہ حال چھت گرنے سے ملبے تلے دب کر باپ جاں بحق بیٹے سمیت 6 افراد زخمی ہوگئے زخمیوں میں ثوبیہ زوجہ عرفان، 3 سالہ زوہیب والد عرفان، 43 سالہ شہناز بی بی، 12 سالہ قریب ممتاز،70 سالہ فتح بی بی، 70سالہ بشیراں زوجہ خوشی محمد شامل ہیں۔ اسی طرح تھانہ لنڈیانوالہ کی حدود نکودر پل کے قریب بارش کے باعث مال مویشیوں کی دیوار و چھت گرنے سے 29 جانور ملبے تلے دب گئے اطلاع پر ریسکیو اہلکاروں نے کارروائی کرتے ہوئے 24 جانوروں کو زندہ نکال لیا جبکہ 5 مویشی جاں بحق ہو گئے۔ شرقپور کے نواحی گاؤں عیسن میں ایک بڑی دیوار اچانک گر گئی جس نے نیچے دب کر تین افراد زخمی ہوگئے جبکہ سات لاکھ روپے کی پانچ بھینسیں ہلاک ہو گئیں۔ دوسرا واقع ٹھٹھہ بامہان میں پیش آیا جس کچی دیوار دو کھیلتے ہوئے بچوں پر آن گری۔ ملبے تلے آکر دونوں بچوں کی ٹانگیں اور بازوؤں کی ہڈیا ں ٹوٹ گئیں۔ تمام زخمی افراد کو ٹی ایچ کیو ہسپتال شرقپور منتقل کیا گیاہے۔ قصور کے مختلف علاقوں میں بھی طوفانی بارش سے 3 چھتیں گرگئیں، جس سے دوخواتین سمیت تین افراد دم توڑ گئے۔ ملتان اور پاکپتن میں بھی دو افراد چھتیں زمین بوس ہونے سے زندگی کی بازی ہارگئے۔اْدھر وزیراعلیٰ پنجاب نے حادثات میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر افسوس کا اظہار کیا ہے، عثمان بزدار نے زخمی افراد کو علاج کی بہترین سہولتیں فراہم کرنے کی بھی ہدایت کی ہے۔

بارش

مزید :

صفحہ آخر -