میرافن میرے ملک و قوم کی امانت ہے،آسیہ ثمن

میرافن میرے ملک و قوم کی امانت ہے،آسیہ ثمن

  

لاہور(فلم رپورٹر)میرافن میرے ملک و قوم کی امانت ہے میں پاکستان چھوڑنے کا تصور بھی نہیں کرسکتی ان خیالات کا اظہارملتان سے تعلق رکھنے والی مقبول گلورہ آسیہ ثمن نے لندن سے فون پرہونے والی بات چیت میں کیا۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا میراپاکستان آناجانامستقل طور پر لگارہتا ہے۔مجھے اپنی مٹی سے بہت پیار ہے میری فیملی کے لوگ، میرے بہن بھائی، عزیزوقارب، دوست احباب سب پاکستان میں ہیں بھلامیں کیسے ان سب کو چھوڑ سکتی ہوں۔آسیہ ثمن نے کہا کہ1984میں میں نے ملتان سے کراچی کارخ کیا یہاں ٹی وی پر کافی کام کیا جبکہ سیدفرقان حیدر صاحب نے مجھے اسٹیج پرمتعارف کرایااور اسٹیج کی کامیابی نے مجھے آگے بڑھنے میں میری کافی مددکی میرے دن کاشوق دن بہ دن بڑھتاجارہا تھا آسیہ ثمن کا کہنا تھا کہ پہلے لوگ اپنے کام پر مکمل توجہ دیا کرتے تھے جبکہ آج وہ اپنی ساری توجہ دوسروں پر تنقید کرنے میں گزاردیتے ہیں۔آج کل دور بہت جدید ہو گیاہے کل ایسا نہیں تھا کل ساتھی فنکاروں کی عزت کی جاتی تھی اپنے سینئیرزسے سیکھنے کی کوشش کی جاتی تھی مگر آج کے اس جدیددور میں یہ سب کچھ دور بلکہ بہت دور تک بھی دکھائی نہیں دیتا۔آسیہ ثمن نے مذیدکہاکہ گانے کی تربیت میں نے ملتان آرٹ کونسل میں استادکریم خاں صاحب سے حاصل کی انہیں پردیس میں اپنے وطن کے ساتھ ساتھ اپنوں کی بھی شدت سے یاد آتی ہے انشاء اللہ بہت جلد وہ وطن واپس لوٹیں گی اور یہاں پر بھی اپنے فن کا مظاہرہ کریں گی۔

مزید :

کلچر -