بکرا منڈی میں قربانی کے جانور بیچنے والی 21 سالہ لڑکی، سوشل میڈیا پر دھوم مچ گئی

بکرا منڈی میں قربانی کے جانور بیچنے والی 21 سالہ لڑکی، سوشل میڈیا پر دھوم مچ ...
بکرا منڈی میں قربانی کے جانور بیچنے والی 21 سالہ لڑکی، سوشل میڈیا پر دھوم مچ گئی

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) خواتین آج ہر شعبے میں مردوں کے شانہ بشانہ چل رہی ہیں مگر آج بھی کئی ایسے شعبے ہیں جن میں خواتین کا آنا معیوب گردانا جاتا ہے۔ ایسا ہی ایک کام منڈیوں میں جانوروں کی دیکھ ریکھ کرنا اور انہیں فروخت کرنا ہے جو خالصتاً مردوں کا کام خیال کیا جاتا ہے تاہم کراچی کی ایک بہادر لڑکی نے اس خیال کو بھی غلط ثابت کر دیا ہے جو سپرہائی وے پر لگنے والی جانوروں کی منڈی میں اپنے جانور خود فروخت کر رہی ہے۔ ویب سائٹ پڑھ لو کے مطابق اس 21سالہ لڑکی کا نام عائشہ غنی ہے جو کراچی کے علاقے گلشن اقبال کی رہائشی ہے۔

عائشہ روزانہ صبح گلشن اقبال سے منڈی جاتی ہے اور تمام دن جانوروں کی دیکھ بھال کرتی، انہیں چارہ ڈالتی اور حتیٰ کہ ان کی صفائی بھی کرتی ہے اور گاہکوں کے ساتھ بھی ڈیل کرتی ہے۔ اس نے منڈی میں اپنا ایک کیمپ لگا رکھا ہے جس میں 36جانور موجود ہیں جن میں گائے، بیل اور بچھڑے شامل ہیں۔ عائشہ نے ان کی قیمتیں 1لاکھ 30ہزار روپے سے 7لاکھ روپے تک فکس کر رکھی ہیں۔ صرف منڈی میں ہی نہیں، وہ اپنے جانور آن لائن بھی فروخت کرتی ہے۔ وہ جانوروں کے ساتھ سیلفی بناتی اور سوشل میڈیا پر پوسٹ کردیتی ہے جہاں سے گاہک اس سے رابطہ کرتے اور قربانی کے لیے جانور خریدتے ہیں۔ عائشہ کی ان تصاویر اور ویڈیوز کی سوشل میڈیا پر دھوم مچی ہوئی ہے اور لوگ اس کی ہمت کی داد دیتے نظر آتے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -علاقائی -سندھ -کراچی -