اپنی گرل فرینڈ سے ملنے کے لیے بھارتی نوجوان کی پاکستان آنے کی کوشش، ایسی حقیقی کہانی کہ لوگ فلمیں بھول جائیں

اپنی گرل فرینڈ سے ملنے کے لیے بھارتی نوجوان کی پاکستان آنے کی کوشش، ایسی ...
اپنی گرل فرینڈ سے ملنے کے لیے بھارتی نوجوان کی پاکستان آنے کی کوشش، ایسی حقیقی کہانی کہ لوگ فلمیں بھول جائیں

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بالی ووڈ کی فلموں میں ہیرو کے بارڈر عبور کرکے پاکستان آنے کے مناظر تو آپ نے دیکھ رکھے ہوں گے لیکن گزشتہ دنوں ایک بھارتی مسلمان نوجوان اپنی پاکستانی محبوبہ سے ملنے کے لیے بارڈر پر پہنچ گیا اور حقیقت میں ایسی کہانی بنا ڈالی کہ لوگ فلموں کو بھول جائیں۔ ویب سائٹ مینگو باز کے مطابق اس 20سالہ نوجوان کا نام محمد ذیشان صدیقی ہے جو بھارتی ریاست مہاراشٹرکا رہائشی ہے۔

وہ ایک موٹر سائیکل پر مہاراشٹر سے گجرات کے قریب رن آف کچھ سے بارڈر عبور کرنے والا تھا لیکن صحرا میں طویل سفر کے باعث جسم میں پانی کی کمی ہونے سے بارڈر سے ڈیڑھ کلومیٹر پیچھے ہی بے ہوش ہو کر گر گیا۔یہ 16جولائی کا دن تھا۔ وہاں سے بے ہوشی کی حالت میں اسے بھارتی بارڈر سکیورٹی فورس کے اہلکاروں نے اٹھایا اور جب اس کے ہوش میں آنے پر اس سے تفتیش کی گئی تو اس نے سچ اگل دیا کہ اس کی ایک پاکستانی لڑکی سے فیس بک پر دوستی ہوئی جو محبت میں بدل گئی۔ وہ لڑکی کراچی میں رہتی ہے اور وہ اس سے ملنے کے لیے بارڈر عبور کرکے کراچی جانا چاہتا تھا۔

رپورٹ کے مطابق ذیشان نے اس سفر میں گوگل میپس سے بھی بہت مدد لی اور اس نے بارڈر سے آگے کراچی کا راستہ بھی گوگل میپس پر سرچ کر رکھا تھا۔ وہ 1200میل کا سفر کرکے مہاراشٹر سے رن آف کچھ میں بارڈر تک پہنچا تھا لیکن بیچارا مجنوں صحرا کی گرمی برداشت نہ کر سکا اور ڈھیر ہو گیا۔ اس کے والدین نے اس کے غائب ہونے کے بعد اس کی گمشدگی کی رپورٹ بھی پولیس کو درج کروا دی تھی۔ پاکستان اور بھارت میں سوشل میڈیا پر اس نوجوان کی اس حرکت کے خوب چرچے ہیں اور اس کے ساتھ اس پاکستانی لڑکی کی ایک تصویر بھی سوشل میڈیا پر بہت وائرل ہو رہی ہے تاہم لوگوں کا کہنا ہے کہ ہر کہانی ’ویر زارا‘ نہیں ہوتی، اکثر کہانیاں انٹرنیشنل بارڈر پر آ کر دم توڑ دیتی ہیں۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -بین الاقوامی -