عراق میں جاری خانہ جنگی سے 10لاکھ افراد نقل مکانی پر مجبور ،اقوام متحدہ

عراق میں جاری خانہ جنگی سے 10لاکھ افراد نقل مکانی پر مجبور ،اقوام متحدہ

 نیویارک(ثناءنیوز)اقوام متحدہ نے کہاہے کہ اس سال کے آغاز سے اب تک عراق کے تنازع کے باعث 10 لاکھ افراد نقل مکانی کر چکے ہیں، ایسے میں جب اس وقت بیجی میں تیل کی ایک اہم رفائنری پر قبضے کے لیے عراقی فوج اور باغیوں کے درمیان لڑائی جاری ہے۔یہ بات اقوام متحدہ کے پناہ گزینوں سے متعلق ادارے کے ترجمان، آندریا ایڈورڈس نے گذشتہ روزجنیوا میں بتائی۔انہوں نے کہا کہ عراق میں نقل مکانی کے معاملے میں ہمارے سامنے 10 لاکھ کا عدد ہے،جس سے انبار کے علاقے میں ہونے والی نقل مکانی کی نشاندہی ہوتی ہے،جو اس سال پہلی چھ ماہی کی صورت حال ہے۔ مزید یہ کہ موصل اور دیگر علاقوں سے تازہ ترین ترک وطن جس میں لاکھوں کی تعداد میں پناہ گزیں شامل ہیں، ایک الگ معاملہ ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ دولت اسلامیہ عراق ولشام، اور لیواں کے مسلح ملیشا کیمیائی ہتھیاروں کی ایک تنصیب پر قابض ہوگئے ، جو کسی وقت عراقی لیڈر،صدام حسین کی سرپرستی میں ہوا کرتی تھی۔

مزید : عالمی منظر


loading...