اقوام متحدی کی جانب سے امداد کی جبری فراہمی حملہ سمجھی جائے گی،شام

اقوام متحدی کی جانب سے امداد کی جبری فراہمی حملہ سمجھی جائے گی،شام

 دمشق/نیویارک(ثناءنیوز)خانہ جنگی کے شکار ملک شام نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو خبردار کیا ہے کہ اس کی بین الاقوامی سرحدوں کے اندر دمشق حکومت کی اجازت کے بغیر ضرورت مند شہریوں کو امداد کی جبری فراہمی شام پر حملہ تصور کی جائے گی۔نیو یارک سے موصولہ رپورٹوں کے مطابق کئی شامی اور عرب وکلاءنے سلامتی کونسل کے نام لکھے گئے ایک خط میں کہا کہ خانہ جنگی کے متاثرین کی مدد کے لیے امدادی کارروائیوں سے پہلے اس بارے میں دمشق حکومت کے ساتھ معاہدہ لازمی ہو گا۔ دوسری صورت میں ایسے کسی بھی جبری امدادی مشن کی حیثیت شامی ریاست پر حملے کی سی ہو گی۔شام میں اس وقت ساڑھے تین ملین سے زائد شہریوں کو انسانی بنیادوں پر امداد کی اشد ضرورت ہے۔

مزید : عالمی منظر


loading...