سانحہ ماڈل ٹاؤ ن میں ہلاک ہونے والوں کے لواحقین کو تاحال امدادی رقو م کے چیک نہ مل سکے

سانحہ ماڈل ٹاؤ ن میں ہلاک ہونے والوں کے لواحقین کو تاحال امدادی رقو م کے چیک ...

 لاہور(شہباز اکمل جندران//انویسٹی گیشن سیل) وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی طرف سے اعلان کے باوجود سانحہ لاہور میں ہلا ک ہونے والوں کے لواحقین کو تاحال امدادی رقوم کے چیک جاری نہ ہوسکے۔سانحہ لاہور میں ہلاک ہونے والوں کے لواحقین کو فی کس 30لاکھ روپے امداد دینے کا علان کیا گیا تھا۔معلوم ہواہے کہ 17جون کو لاہور کے علاقے ماڈل ٹاؤن ایکسٹینشن میں منہاج القرآن کے مرکزی سیکرٹریٹ کے باہر موجود رکاوٹوں کو ہٹاتے ہوئے پولیس اور عوامی تحریک کے کارکنوں میں خونریز تصادم واقع ہوا ،جس کے نتیجے میں80سے زائد افراد زخمی ہوئے جبکہ 10افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔وزیر اعلیٰ پنجاب نے ہلاک ہونے والوں کے لواحقین کی مالی امداد کے لیے فی کس 30لاکھ روپے ادا کرنے کا حکم دیا۔ لیکن ذرائع سے معلوم ہواہے کہ وزیر اعلیٰ کے حکم پر تاحال عمل درآمد ممکن نہیں ہوسکا۔بتایا گیا ہے کہ جاں بحق ہوئے جاں بحق ہونے والوں میں پیکو روڈ کوٹ لکھپت کا رہائشی21 سال محمد عمر صدیق ،تاج پورہ کا رہائشی22 سالہ عاصم حسین ،بابا فرید کالونی کوٹ لکھپت کا رہائشی 48 سالہ محمد اقبال ،واہگہ ٹاون کی رہائشی 30 سالہ تنزیلہ اور 28 سالہ شازیہ ،شیخوپورہ کا رہائشی 35 سالہ صفدر اور عزیز بھٹی ٹاون کا رہائشی 56 سالہ غلام رسول شامل ہیں جبکہ دوسرے دن 18 جون کو 28 سالہ شہباز زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا اسی طرح 19 جون کو چکوال کا رہائشی 22 سالہ حافظ رضوان خان اور سرگودھا کوٹ مومن کاحافظ خاور شامل ہیں۔ اس سلسلے میں گفتگو کرتے ہوئے ڈی سی او لاہور کیپٹن(ر) محمدعثمان کا کہناتھاکہ ابھی تک چیک تقسیم نہیں ان کی ٹیمیں مرنے والوں کے قانونی ورثاء کی تلاش اور چھان بین کررہی ہیں۔یہ عمل مکمل ہوتے ہی امدادی چیک تقسیم کردیئے جائینگے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...