سانحہ ماڈل ٹاﺅن، عوامی تحریک کے کاکنوں نے پولیس پر آنسو گیس کی شیلنگ کی ،ایف آئی آر کے مندرجات

سانحہ ماڈل ٹاﺅن، عوامی تحریک کے کاکنوں نے پولیس پر آنسو گیس کی شیلنگ کی ،ایف ...

                     لاہور(شعیب بھٹی) سانحہ ماڈل ٹاﺅن میں پولیس کی بوکھلاہٹ کا ایک اورثبوت سامنے آگیا ہے۔ایس ایچ او فیصل ٹاﺅن رضوان ہاشمی کی مدعیت میں درج کئے جانے والے مقدمے میں الزام عائد کیا گیا ہے کہ عوامی تحریک کے کارکنوں نے پولیس پر آنسو گیس کی شیلنگ کی۔ حالانکہ ملک کے کسی بھی حصے میں آنسو گیس کی خرید و فروخت کا کارروبار نہیں ہوتا۔ سانحہ ماڈل ٹاﺅ ن لاہور کے خلاف درج ہونے والی ایف آئی آر کے مطابق لاہور پولیس منہاج القرآن کے مرکزی سیکرٹریٹ کے باہر موجود رکاوٹوں کوہٹانے پہنچی تو عوامی تحریک کے کارکنوں نے پولیس پر اندھا دھند آنسو گیس کی شیلنگ اور پتھراﺅ کے ساتھ ساتھ فائرنگ بھی کی۔ ایس ایچ او فیصل ٹاﺅن رضوان ہاشمی کی مدعیت میں درج کئے جانے والے مقدمہ نمبر 510/14میں دو مختلف مقامات پر درج کیا گیا ہے کہ عوامی تحریک کے کارکنوں نے پولیس پر آنسو گیس کی شیلنگ کی۔حالانکہ ہینڈ گرینیڈ یا بم کی طرح آنسو گیس بھی ممنوع آئٹم ہے۔ جس کی ملک بھر میں خریدوفروخت ممکن نہیں ہے۔ اور نہ ہی اس سلسلے میں کسی قسم کا لائسنس وغیر ہ جاری کیا جاتا ہے۔ اس کے باوجود لاہور پولیس نے ایف آئی آر میں دو جگہوں پر ذکر کیا ہے کہ عوامی تحریک کے کارکنوں نے پولیس پر آنسو گیس کی شیلنگ کی۔اس سلسلے میں گفتگو کرتے ہوئے پنجاب کے ایک سابق آئی جی کا کہنا تھا کہ تھانہ فیصل ٹاﺅن کی پولیس نے انتہائی حماقت کا ثبوت دیا ہے۔ کیونکہ آنسو گیس ٹینڈر کے بعد بااختیار ڈیلروں کے ذریعے بیرون ملک سے خریدی جاتی ہے۔ اور صرف پولیس جیسے قانون نافذ کرنے والے اداروں کوہی آن ڈیمانڈ دی جاتی ہے۔ جس کے استعمال کی باقاعدہ اجازت دی جاتی ہے۔

آنسو گیس

مزید : صفحہ آخر


loading...