ڈالر لواور واپس چلے جاﺅ: آسٹریلیا کی پاکستانی پناہ گزینوں کو پیشکش

ڈالر لواور واپس چلے جاﺅ: آسٹریلیا کی پاکستانی پناہ گزینوں کو پیشکش
ڈالر لواور واپس چلے جاﺅ: آسٹریلیا کی پاکستانی پناہ گزینوں کو پیشکش

  


سڈنی (مانیٹرنگ ڈیسک) آسٹریلیا نے پیسیفک امیگریشن کیمپوں میں موجود پاکستانی پناہ گزینوں کو رضا کارانہ طور پر اپنے آبائی وطن واپس لوٹ جانے کی صورت میں تین ہزار آسٹریلین ڈالرز سے زائد رقم دینے کی پیشکش کردی، جس سے پناہ گزینوں کے حق میں مہم چلانے والے حلقوں میں اشتعال پھیل گیا۔ ہفتہ کو ایک آسٹریلین اخبار ”سڈنی مارننگ ہیرالڈ“ کی رپورٹ کے مطابق پاپوانیوگنی کے منوس آئی لینڈ اور پیسیفک ریاست نیرو کے حراستی مراکز میں موجود افراد کو لبنان لوٹ جانے کی صورت میں دس ہزار آسٹریلین ڈالر دینے کی پیشکش کی اور ایرانی اور سوڈانی افراد کو اپنی پناہ گزین کی حیثیت ختم کرنے پر سات ہزار ڈالرز دینے کا وعدہ کیا گیا جبکہ افغانیوں کیلئے رقم چار ہزار ڈالراور پاکستان، نیپال اور میانمار کے باشندوں کے لئے 3300 ڈالرز ہے۔ آسٹریلیا کے امیگریشن وزیر اسکاٹ موریسن کا کہنا ہے کہ یہ آفر ایک دہائی سے چل رہی ہے جس کے تحت رضا کارانہ طور پر اپنے وطن لوٹ جانے والوں کو آبادکاری کے پیکجز کے تحت رقوم کی پیشکش کی جاتی ہے۔وزارت امیگریشن کے مطابق گزشتہ سال ستمبر میں 283 افراد رضاکارانہ طور پر واپس لوٹ چکے ہیں۔ دوسری جانب پناہ گزینوں کے حامیوں نے رقوم کی ادائیگی کے خیال کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ ان افراد کو وطن واپسی پر سزاﺅں کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔

مزید : انسانی حقوق


loading...