آسٹریلیا نے پناہ گزینوں کو واپسی کیلئے بھاری رقوم کی پیشکش کردی

آسٹریلیا نے پناہ گزینوں کو واپسی کیلئے بھاری رقوم کی پیشکش کردی
آسٹریلیا نے پناہ گزینوں کو واپسی کیلئے بھاری رقوم کی پیشکش کردی

  


سڈنی (نیوز ڈیسک) پسماندہ اور ترقی پذیر ممالک کے غربت اور بدحالی کے ستائے ہوئے عوام اپنے ملکوں کو چھوڑ کر مغربی ممالک کا رخ کرنے کیلئے ہمہ وقت بے چین رہتے ہیں اور ایک اندازے کے مطابق ایسے پناہ گزینوں کی تعداد پانچ کروڑ سے زائد ہو چکی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اب مغربی ممالک میں بھی ان لوگوں کو واپس بھیجنے کیلئے ہر ممکن کوشش کر رہے ہیں۔ آسٹریلیا میں حکومت نے اپوزیشن کی شدید مخالفت کے باوجود سیاسی پناہ گزینوں کو اپنے اپنے وطن واپس جانے کیلئے بھاری رقوم کی پیشکش شروع کر دی ہے۔ برسر اقتدار لبرل پارٹی نے پناہ گزینوں کو واپس جانے کیلئے 10 لاکھ روپے تک کی پیشکش کی ہے۔ پناہ گزینوں کو پیش کی جانے والی رقوم میں اضافے کافیصلہ ایک تامل پناہ گزین کی طرف سے خود کو آگ لگانے کے واقعے کے بعد سامنے آیا ہے۔ یہ پناہ گزین اپنے وطن واپس بھیجے جانے کے خلاف احتجاج کر رہا تھا۔ آسٹریلیا میں سیاسی پناہ لینے والوں کو واپس بھیجنے کیلئے کوششیں تیز ہو چکی ہیں اور لبنان کے پناہ گزینوں کو واپس جانے کیلئے تقریباً 10 لاکھ روپے، ایرانیوں کو تقریباً 7 لاکھ روپے، افغانیوں کو تقریباً 4 لاکھ جبکہ نیپالی، برمی اور سوڈانی پناہ گزینوں کو وطن واپس جانے کیلئے تقریباً ساڑھے تین لاکھ روپے کی پیشکش کی جا رہی ہے۔بتایا جا رہا ہے کہ پاکستانی پناہ گزینوں کے لئے بھی 3لاکھ روپےسے زائد کی پیشکش کی جا رہی ہے۔

مزید : انسانی حقوق


loading...