سنی تحریک علماءبورڈ نے’ ضرب عضب‘ کی حمایت فرض قرار دے دی

سنی تحریک علماءبورڈ نے’ ضرب عضب‘ کی حمایت فرض قرار دے دی

آپریشن عین جہاد،قوم پر حمایت شرعی طور پر واجب ہے :100سے زائد علماءکا فتویٰ

سنی تحریک علماءبورڈ نے’ ضرب عضب‘ کی حمایت فرض قرار دے دی

  


کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)سنی تحریک کے علماءبورڈ نے شمالی وزیرستان میں جاری آپریشن"ضرب عضب" کی حمایت کو فرض قرار دے دیا ہے،سو سے زائد علما کی جانب سے جاری فتوے میں آپریشن کو عین جہاد قرار دیتے ہوئے قوم پر اس کی حمایت شرعی طور پر واجب قرار دی گئی ہے۔ فتوے میں کہا گیا ہے کہ اس جہاد کی مخالفت کرنے والا بھی شریعت کی رو سے باغی گردانا جائے گا جس کے خلاف ریاست باغیوں جیسے سلوک کا حق رکھتی ہے۔ فتوے میں کہا گیا ہے کہ انتہا پسنددہشتگرد ہزاروں بے گناہ افراد کے قاتل ہیں۔ اسلام کسی بھی صورت نجی جہاد کی اجازت نہیں دیتا اسلام کے نام پر مسلح کارروائیاں کرنے والے  بیرونی قوتوں کے آلہ کار ہیں جنہوں نے عبادت گاہوں، مزارت، اسکولوں اسپتالوں اور دفاعی تنصیبات کو نشانہ بنایا۔ دہشتگردوں نے معصوم بچوں، بے گناہ خواتین، علماءکرام اور اقلیتوں کو بھی بربریت کا نشانہ بنایا۔ دہشتگرد اعلانیہ طور پر ریاست کے آئین کو ماننے سے بھی انکاری ہیں۔ سنی تحریک علما بورڈ کے فتوے میں سورة المائدہ کی آیت نمبر 33 کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ مسلم ریاست اور اجتماعی نظم کے خلاف مسلح بغاوت کو طاقت سے کچلا جائے۔

مزید : کراچی /اہم خبریں


loading...