ملائیشین طیارہ گمشدگی: تحقیقات کا رخ ایک بار پھر پائلٹ کی طرف

ملائیشین طیارہ گمشدگی: تحقیقات کا رخ ایک بار پھر پائلٹ کی طرف
ملائیشین طیارہ گمشدگی: تحقیقات کا رخ ایک بار پھر پائلٹ کی طرف

  


کوالالمپور (نیوز ڈیسک)ملائیشین طیارے کی پر اسرار گمشدگی کو تین ماہ سے زائد عرصہ گزرچکا ہے لیکن اب تک اس کے انجام کے حوالے سے کوئی مصدقہ اطلا ع سامنے نہیں آسکی، مختلف تحقیقاتی اداروں اور غیر جانبدارماہرین کی جانب طرح طرح کے بیانات سامنے آتے رہے لیکن کوئی بھی حتمی طورپر اس طیارے کی کوئی اطلاع نہ سے سکا ۔ اب تازہ ترین اطلاعات کے مطابق تحقیقاتی اداروں کی توجہ اب پائلٹ کی جانب مرکوز ہے اور اسے اس کہانی کا سب سے مشتبہ کردار کہا جا رہا ہے ۔ اخبار دی سنڈے ٹائمز کے مطابق تفتیشی ٹیم نے جہاز کے تمام عملے کے بیک گراو¿نڈ کی مکمل چیکنگ کی ہے اور ان میں مشکوک کردار صرف جہاز کے کیپٹن ظہاری شاہ کا ہی نظر آتا ہے ۔ رپورٹ کے مطابق پائلٹ وہ عملے کا واحد شخص ہے جس نے مستقبل قریب میں کسی قسم کا سماجی یا کام کے حوالے سے کوئی بھی پروگرام نہیں بنارکھا تھا ۔ مزید یہ کہ اس کے گھر میں پائے جانے والے بناو¿ٹی جہاز (فلائٹ سیمو لیٹر ) سے ڈیلیٹ کیا جانے والا ڈیٹا بھی تحقیقاتی ٹیموں نے بازیاب کر لیا ہے ۔ اس سے یہ شک بھی درست ثابت ہوا ہے کہ پائلٹ دو دراز کے علاقوں میں جہاز اتارنے اور اڑانے کی مشق کرتا رہا ۔ ان میں چند جگہیں ساو¿تھ انڈین سمندر میں بھی ہیں ۔اس سے قبل پائلٹ کے گھر میں جاری تنازعات کی خبریں بھی اخبارات میں چھپ چکی ہیں ۔ پائلٹ ملائیشیا کے اپوزیشن رہنما کا بھی سپورٹرتھا اور فلائٹ سے چند گھنٹے قبل ہی انہیں ایک متنازعہ مقدمے میں 5سال قد کی سزا سنائی گئی ۔ دعویٰ کیا گیا ہے کہ ان تمام پہلوﺅ ں کا از سر نو جائزہ لیا جا رہا ہے اور اب ماہرین کو سب سے زیادہ شک ایک مرتبہ پھر اس پائلٹ پر ہی ہے ۔

مزید : بین الاقوامی


loading...