اپنے دشمن کی نعشیں اٹھا کر گھومنے والا کیڑا

اپنے دشمن کی نعشیں اٹھا کر گھومنے والا کیڑا
اپنے دشمن کی نعشیں اٹھا کر گھومنے والا کیڑا

  


کیلیفورنیا (نیوزڈیسک ) انسانوں میں مایا تہذیب سے لے کر چینی اقوام تک میں اپنے دشمنوں کو قتل کر کے ان کی لاشوں کو استعمال میں لانے کی باتیں تاریخ کا حصہ ہیں۔ بہت سے لوگوں کا یہ خیال ہے کہ انسانی کھوپڑیاں روحانی قوت فراہم کرتی ہیں۔کچھ انھیں اپنے دشمنوں کو ڈرانے کے لیے استعمال کرتے تھے جبکہ بعض قومیں کھوپڑیوں سے یادگاریں بنانے کی شوقین تھیں۔ قاتل کھٹمل نامی ایک (خون چوسنے والا) مکوڑا بھی اسی قسم کی بے رحم عادت میں مبتلا ہے۔ یہ اپنے شکار کے جسم میں اپنی سونڈ داخل کر کے اسے چوس لیتا ہے۔ پھر اس کے مردہ لاشے کو اپنی پیٹھ پر چپکا لیتا ہے۔اور ایسا صرف ایک بار نہیں ہوتا بلکہ قاتل کھٹمل اپنے شکاروں کے کئی لاشوں کا وزن اپنی پشت پر اُٹھائے ہوئے پائے گئے ہیں۔گو یہ سب کچھ بوجھل اور غیر ضروری بدشگونی کا باعث بنتا ہے لیکن ظاہری ہیئت کی تبدیلی کے ساتھ ساتھ یہ لاشے قاتل کھٹمل کا بہت مو¿ثر ہتھیار بھی ہیں ۔ خیال رہے کہ دنیا میں قاتل مکوڑوں کی تقریباً7000اقسام پائی جاتی ہیں۔ یہ سب انتہائی سخت اور خوفناک قسم کی چونچ رکھتے ہیں۔ یونیورسٹی آف کیلی فورنیا کے بیالوجسٹ کرسٹین ویراچ کے مطابق یہ مکوڑے دیمک، شہد کی مکھی اور چیونٹی کی طرح اپنی نوک یا جبڑوں کو شکار کی بیرونی کھال میں داخل کر کے اس کے جسم میں اپنا زہر منتقل کرتے ہیں۔ یہ زہر شکار کو مفلوج کرنے کے بعد اس کے اندرونی اعضاءکو پگھلا نا شروع کر دیتا ہے جیسا کہ مکڑی بھی اپنے شکار کے ساتھ یہی سلوک کرتی ہے۔کرسٹین ویراچ کا مزید کہنا ہے کہ پہلے وار کے بعد جب شکار تڑپنا بند کرتا ہے تو یہ قاتل کھٹمل اپنے جبڑے کے ذریعے ایک سوراخ کر کے اندر سے اسے کھانا شروع کر دیتا ہے۔اس کے بعدشکار کے جسم سے نکلنے والے سیّال مادوں کو اپنی جلد پر اورمردہ شکار کو اپنی پشت پر لگا لیتا ہے۔جب کوئی گھریلو چھپکلی اس قاتل کھٹمل کو پکڑنے کی کوشش کرتی ہے تو اس کا منہ کھٹمل کی بجائے چیونٹیوں وغیرہ کے لاشوں سے بھر جاتا ہے۔کرسٹین ویراچ کے مطابق یہ بہت ذہین مکوڑا ہے۔ چیونٹیاں اور دیمکیں اپنی برادری کے مردہ ارکان کی لاشیں ممکنہ بیماری یا غم وغیرہ کے اندیشے سے کو دور پھینک آتی ہیں جبکہ یہ قاتل کھٹمل اس کا فائدہ اُٹھاتا ہے۔ یہ کسی ایک چیونٹی یا دیمک کو پکڑ کر چوس لیتا ہے۔ پھر اسے اٹھانے کے لئے آنے والے دیگر مکوڑوں کا شکار کر لیتا ہے ۔ایک عینی شاہد کے مطابق یہ قاتل کھٹمل ایک ہی نشت میں 48دیمکوں کا کام تمام کر دیتا ہے۔

مزید : تفریح


loading...