ہاؤسنگ سوسائیٹوں سے عوام کی لوٹی گئی دولت کی واپسی اولین ترجیح ہے: چیئرمین نیب

ہاؤسنگ سوسائیٹوں سے عوام کی لوٹی گئی دولت کی واپسی اولین ترجیح ہے: چیئرمین ...

  

اسلام آباد /لاہور (این این آئی،مانیٹرنگ ڈیسک) قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ نیب چہرے نہیں بلکہ مقدمات پر توجہ دیتے ہوئے بدعنوان عناصر کے خلاف آہنی ہاتھوں سے قانون کے مطابق عمل پیرا ہے ۔ گزشتہ روز چےئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے نیب ہیڈ کوارٹرز میں ایک اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت کی جس میں ڈپٹی چےئرمین نیب ، پراسیکیوٹر جنرل اکاؤٹیبلٹی ، ڈی جی آپریشن اور دیگر سینئر افسران نے شرکت کی ۔ اجلاس میں نیب کے آپریشن ڈویژن کی کارکردگی کا جائزہ لیا گیا ۔ چےئرمین نیب نے کہاکہ نیب کی اولین ترجیح نجی اور کو آپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹیوں سے عوام کی عمر بھر کی لوٹی گئی رقوم کی واپسی ہے ۔ نیب نے گزشتہ 7ماہ میں تقریبا 10ہاؤسنگ سوسائٹیوں کے متاثرین کو تقریباً 22سو ملین روپے کی رقم متعلقہ ہاؤسنگ سوسائٹیوں سے برآمد کر کے واپس کی ہے، جو اس بات کا مظہر ہے کہ نیب چہرے نہیں بلکہ مقدمات پر توجہ دیتے ہوئے بدعنوان عناصر کے خلاف آئینی ہاتھوں سے قانون کے مطابق عمل پیرا ہے ۔نجی ٹی وی کے مطابق چیئرمین نیب نے علیم خان کی ہاوسنگ سوسائٹی کے منسوخ شدہ ڈیزا ئن کی منظوری کا نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ سی ڈی اے بورڈ نے قواعد و ضوابط کے برعکس علیم خان کی ہاؤسنگ سوسائٹیپارک ویو انکلیو ہاؤسنگ سوسائٹی کے منسوخ شدہ ڈیزائن کی منظوری کیسے دی؟ ڈی جی نیب راولپنڈی معاملے کی انکوائری کریں۔دوسری جانب شرجیل میمن کیخلاف آمدن سے زائد اثاثوں کی شکایت پر بھی چیئرمین نے ڈی جی نیب کراچی کو جانچ پڑتال کا حکم دیا ہے۔سابق وفاقی وزیر انوشہ رحمان بھی نیب راولپنڈی کے دفتر میں پیش ہوئیں۔ مشترکہ تحقیقاتی ٹیم نے انوشہ رحمان کو سوالنامہ دیتے ہوئے ہدایت کی ہے کہ 14 روز میں تحریری جواب جمع کرایا جائے۔ سابق وفاقی وزیر پر الزام ہے کہ انہوں نے تھری اور فور جی لائسنس کی فروخت کے غیرقانونی ٹھیکے دیے۔ چےئرمین نیب نے ہدایت کی ہے کہ سی ڈی اے بورڈ نے مبینہ طور پر قواعد و ضوابط کے برعکس کس طرح منسوخ شدہ ڈیزائن کی سوسائٹیکی منظوری دی اور کیا انصاف کے تمام تقاضے پورے کئے گئے کیونکہ نیب کا مقصد عوام کی حق حلال کی عمر بھر کی جمع پونجی کو ضائع ہونے سے بچانا مقصود ہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -