فوج کی نگرانی میں الیکشن کروانے کا فیصلہ درست ہے: سیف اللہ خالد

فوج کی نگرانی میں الیکشن کروانے کا فیصلہ درست ہے: سیف اللہ خالد

  

لاہور( ایجوکیشن رپورٹر )ملی مسلم لیگ کے صدر سیف اللہ خالد نے کہا ہے کہ فوج کی نگرانی میں الیکشن کروانے کا الیکشن کمیشن کا فیصلہ درست ہے۔دھاندلی کا واویلا کرنے والی جماعتوں کو اس فیصلے پر شور نہیں کرنا چاہئے۔بیگم کلثوم نواز کی صحتیابی کے لئے دعا گو ہیں۔ملی مسلم لیگ ملک بھر میں اللہ اکبر تحریک کے نامزد امیدواروں کی حمایت کرے گی۔صادق و امین امیدواروں کی کامیابی کے لئے قوم اللہ اکبر تحریک کا ساتھ دے۔ختم نبوت قانون میں ترمیم اور بھارت سے دوستی کرنے والوں کو مسترد کرنے کا وقت آ گیا ہے۔ان خیالات کااظہار انہوں نے اپنے دفتر میں مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔سیف اللہ خالد نے کہا کہ ملی مسلم لیگ نے عام انتخابات 2018میں اللہ اکبر تحریک کے امیدواروں کی حمایت کا فیصلہ کیا ہے۔الیکشن کمیشن نے ملی مسلم لیگ کی رجسٹریشن نہ کر کے ہم سے بنیادی حق چھینا حالانکہ ہمیں پاکستان میں سیاست کرنے کا حق حاصل ہے۔الیکشن کمیشن کو اختیار نہیں تھا کہ وہ ہماری رجسٹریشن کی درخواست کو رد کرتا۔الیکشن کمیشن کے فیصلے کے خلاف ہم اعلیٰ عدلیہ سے رجوع کریں گے۔انہوں نے کہا کہ 2018میں ہونے والا الیکشن عام الیکشن نہیں۔ہم نظریہ پاکستان کی بنیاد پر قوم کو متحد کریں گے۔سیف اللہ خالد نے بیگم کلثوم نواز کی صحت یابی کے لئے بھی دعا کی۔انہوں نے کہا کہ ہم نظریہ پاکستان ہی بقائے پاکستان ہے اور ہماری سیاست خدمت انسانیت کے منشور کے مطابق الیکشن میں امیدوراوں کی انتخابی مہم چلائیں گے اور ملک بھر میں دفاتر کھولے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ ہم عزم کر کے نکلے ہیں کہ اب سیاست کے دھاروں کو بدلیں گے اور بڑی بڑی پارٹیوں کے لیڈروں کو باور کروا رہے ہیں کہ بانی پاکستان نے جو نظریہ دیا تھا اسی پر چلیں۔جو اس نظریہ پر سیاست کرے گا اس کے راستے میں رکاوٹ نہیں بنیں گے۔

سیف اللہ خالد

مزید :

علاقائی -