فلسطینیوں کی43فیصدآبادی پناہ گزینوں پر مشتمل ہے،رپورٹ

فلسطینیوں کی43فیصدآبادی پناہ گزینوں پر مشتمل ہے،رپورٹ

  

رام اللہ (اے این این)فلسطین کے سرکاری اعدادو شمار میں بتایا گیا ہے کہ فلسطین کی کل آبادی کا 42.5فی صد پناہ گزینوں پر مشتمل ہے جو اندرون ملک اور بیرون ملک پناہ گزین کی حیثیت سے مقیم ہیں۔ فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق فلسطین کے سرکاری ادارہ شماریات کی طرف سے پناہ گزینوں کے عالمی دن کی مناسبت سیجاری ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ دریائے اردن کے مغربی کنارے میں آبادی فلسطینیون میں 26.6 فی صد پناہ گزین ہیں جب کہ غزہ کی پٹی میں فلسطینی پناہ گزینوں کی تعداد 66.2 فی صد ہے۔اقوام متحدہ کے اعدادو شمار کے مطابق سنہ 1948 کی جنگ کے وقت فلسطینی پناہ گزینوں کی تعداد سات لاکھ 26 ہزار تھی۔ سنہ 1949 میں یہ تعداد 9 لاکھ 57 ہزار ہوگئی۔اقوام متحدہ کی فلسطینی پناہ گزینوں کی کفالت کی ذمہ دار ریلیف اینڈ ورکس ایجنسیاونروا کے ریکارڈ کے مطابق سنہ 2017 میں فلسطینی پناہ گزینوں کی تعداد56 لاکھ تک پہنچ گئی تھی۔اونروا کے زیرکفالت 17 فی صد پناہ گزین غرب اردن میں، 24.4 فی صد غزہ،39 فی صد اردن،9.1 فی صد لبنان اور10.5 فی صد شام میں ہیں۔فلسطین کے سرکاری محکمہ شماریات کے مطابق سنہ 2017 کے دوران فلسطینی پناہ گزینوں میں 15 سال سے کم عمر افراد کی تعداد 39.3 فی صد اور دیگر افراد کی تعداد 38.6 فی صد تھی۔رپورٹ کے مطابق 60 سال یا اس سے زاید عمر کے فلسطینی پناہ گزینوں کی تعداد 4.9 فی صد جب کہ غیر پناہ گزین فلسطینیوں میں 60 سال اور اس سے زاید عمر کے افراد کی تعداد 5 فی صد ہے۔فلسطینی پناہ گزینوں میں اوسطا ایک خاتون 4.4 بچوں کی ماں اور جب کہ غیر پناہ گزین خواتین میں یہ شرح 4.3 فی صد ہے۔

مزید :

عالمی منظر -