ابراہیم خان میپکو کے 8لاکھ اور کامران عبداللہ 22لاکھ کے ڈیفالٹر

ابراہیم خان میپکو کے 8لاکھ اور کامران عبداللہ 22لاکھ کے ڈیفالٹر

  

ملتان ( سٹاف رپورٹر) قومی اسمبلی کے امیدوار ابراہیم خان میپکو کے تقریباً8لاکھ روپے اور صوبائی اسمبلی کے امیدوار میاں کامران عبداللہ مختلف کنکشنوں پر تقریباً 22لاکھ روپے کے ڈیفالٹر نکلے۔ میپکو نے این او سی کا اجرا روک لیا۔ بتایا گیا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی طرف سے این اے 158(بقیہ نمبر40صفحہ12پر )

سے امیدوار ابراہیم خان مختلف کنکشنوں پر میپکو کے 7لاکھ71ہزار211روپے کے ڈیفالٹر ہیں۔ ان کے بھائی عبدالرحمٰن خان کے ذمہ ٹیوب ویل کنکشن کے واجبات کی مد میں 7 لاکھ 635 روپے ہیں جبکہ ایک اور ٹیوب ویل و ڈیرے کے بجلی کے بلوں کی مد میں 70 ہزار 576روپے واجب الادا ہیں۔ دوسری جانب پیپلز پارٹی کی جانب سے پی پی 220سے امیدوار میاں کامران عبداللہ کے ذمہ میپکو کے 21 لاکھ 80ہزار393روپے کے واجبات ہیں۔ مختلف ناموں سے کنکشن لئے گئے ہیں۔ میاں کامران عبداللہ کے اپنے نام ٹیوب ویل کنکشن کی مد میں2لاکھ32ہزار793ہزار روپے‘ ان کی بیٹی رابعہ ظفر کے نام ٹیوب ویل کنکشن کی مد میں18لاکھ70ہزار886روپے‘ ان کی اہلیہ شازیہ غنی کے نام پر گھریلو کنکشن کی مد میں8404روپے‘ واجب الادا ہیں۔ان کے ایک منشی محمد ارشد کے نام پر گھریلو کنکشن کی مد میں 44941روپے‘دوسرے منشی کریم نواز کے نام پر گھریلو کنکشن کی مد میں 23ہزار 365روپے واجب الادا ہیں۔ میپکو نے واجبات کلیئر نہ ہونے پر ابراہیم خان اور میاں کامران عبداللہ کو الیکشن2018میں حصہ لینے کے سلسلے میں این او سی کا اجرا روک دیا ہے۔ میپکو ذرائع کے مطابق مختلف ناموں سے لگے مذکورہ کنکشن ابراہیم خان اور میاں کامران عبداللہ کے زیراستعمال ہیں ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -