پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنیوالے امیدواروں کی نااہلی بلکہ جیل جانے کا خطرہ

پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنیوالے امیدواروں کی نااہلی بلکہ جیل ...
پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنیوالے امیدواروں کی نااہلی بلکہ جیل جانے کا خطرہ

  

لاہو ر(ویب ڈیسک) عام انتخابات نے کئی معروف سیاستدانوں کی دوسری شادیوں کے راز کھول دیئے ہیں ، جنہوں نے پہلی بیوی کی موجودگی میں دوسری شادی کو یا توچھیار رکھا تھا یا عوام کو اس کا پتہ نہیں تھا مگر کاغذات نامزدگی میں ان سیاستدانوں نے ڈکلیئریشن میں اپنی دوسری بیویوں کو بھی ظاہر کیا تا کہ مخالف امیدوار حقائق چھپانے پر ان کے کاغذات نامزدگی مسترد نہ کراسکیں۔ قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ امیدواروں نے دوسری بیوی کا تو بتا دیامگر کیا انہوں نے دوسری شادی کرنے کے لئے پہلی بیوی سے اجازت لی یا نہیں؟ یہ سوال ابھی موجود ہے۔ اگر کوئی مخالف امیدوار اس بنیاد پر نااہلی کیلئے کہ امیدوار نے دوسری شادی کے لئے پہلی بیوی سے اجازت نہیں لی ، عدالتی فورم استعمال کرتا ہے تو دو شادیاں کرنے والے امیدوار کو پہلی بیوی سے اجازت لینے کا ثبوت دینا پڑسکتا ہے اور اگر وہ ثبوت نہیں دیتا تو نااہلی کی زد میں آسکتا ہے کیونکہ مسلم فیملی لاء آرڈیننس 1961ء کے تحت دوسری شادی کے لئے پہلی بیوی کی اجازت ضروری ہے اور پہلی بیوی کی اجازت پر مصالحتی کونسل کی باقاعدہ کارروائی ہوتی ہے ۔

روزنامہ جنگ کے مطابق سابق ڈپٹی اٹارنی جنرل راجہ عبدالرحمن او رلاہور ہائیکورٹ بار کے سابق صدر پیر مسعود چشتی نے بتایا کہ مسلم فیملی لاز آرڈیننس کے تحت بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنے والے شخص کو ایک سال قید یا 5ہزار روپے جرمانہ یا دونوں سزائیں دی جا سکتی ہیں اور فوری طور پر اس سے حق مہر کی رقم بھی وصول کی جائے گی۔ دوسری شادی کرنے کے لئے مصالحتی کونسل کے روبرو مرد کی درخواست پر پہلی بیوی کو طلب کر کے دریافت کیا جاتا ہے کہ کیا اس نے اجازت دی ہے۔ ایسی درخواست مجوزہ فیس کے ساتھ دائر کی جاتی ہے اور دوسری شادی کی وجوہات بھی تحریر کرنا پڑتی ہیں۔

مصالحتی کمیٹی کو درخواست میں درج وجوہات پر اپنا اطمینان کرناہوتا ہے کہ وجوہات درست ہیں ۔ کوئی فریق فیصلہ کے خلاف کلکٹر کے روبرو نگرانی دائر کر سکتا ہے جس کا فیصلہ فائنل تصور کیا جاتا ہے۔یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ خواجہ سعد رفیق بھی دوسری شادی کا اعتراف کرچکے ہیں اور ان کی دوسری شادی کے اعتراف پر پہلی بیوی  نے احتجاجاً کاغذات نامزدگی بھی واپس لے لیے ۔ 

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -