پی ٹی آئی نے بورے والا سے عائشہ نذیر جٹ سمیت تین امیدواروں کے ٹکٹ منسوخ کردیے

22 جون 2018 (15:47)

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے بورے والا سے عائشہ نذیر جٹ سمیت تین امیدواروں کے ٹکٹ منسوخ کردیے گئے ہیں۔
پی ٹی آئی نے آئندہ عام انتخابات کیلئے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 162 سے عائشہ نذیر جٹ کو ٹکٹ جاری کیا تھا۔ عائشہ نذیر جٹ نے اس سے قبل پی پی 232 گگو منڈی (بورے والا) سے مسلم لیگی امیدوار یوسف کسیلیہ کا 2016 کے ضمنی انتخاب میں مقابلہ کیا تھا تاہم وہ اس الیکشن میں فتح یاب نہیں ہوسکی تھیں۔ اس کے علاوہ پی پی 229 (گگو منڈی) سے پی ٹی آئی کی جانب سے عبدالحمید بھٹی اور پی پی 230 سے سابق ایم این اے چوہدری نذیر احمد جٹ کو ٹکٹس جاری کیے گئے تھے تاہم پارٹی کی جانب سے تینوں امیدواروں سے ٹکٹس واپس لے لیے گئے ہیں، تینوں امیدواروں سے ٹکٹس پی ٹی آئی امیدوار کے مقابلے میں آزاد حیثیت میں الیکشن میں حصہ لینے کی وجہ سے واپس لیے گئے ہیں۔
عائشہ نذیر جٹ کی چھوٹی بہن ڈاکٹر عارفہ نذیر جٹ این اے 163 وہاڑی سے آزاد حیثیت میںالیکشن لڑ رہی ہیں ، اسی حلقے سے پی ٹی آئی کے مرکزی رہنما اسحاق خاکوانی پارٹی کے امیدوار ہیں ۔ عارفہ نذیر جٹ اور اسحاق خاکوانی کے مقابلے کے باعث نذیر جٹ گروپ کو تینوں ٹکٹوں سے محروم کردیا گیا ہے۔
خیال رہے کہ 2002 میں چوہدری نذیر جٹ بورے والا سے ق لیگ کے ٹکٹ پر ایم این اے بنے تھے جس کے بعد 2008میں وہ پیپلز پارٹی کے ایم این اے رہے تاہم انہیں سپریم کورٹ کی جانب سے جعلی ڈگری کی بنا پر نا اہل قرار دے دیا گیا تھاجس کے بعد بورے والا شہر کے حلقے سے نذیر جٹ کے بھتیجے چوہدری اصغر جٹ پیپلز پارٹی کے ایم این اے منتخب ہوئے۔ 2013 کے الیکشن میں نذیر جٹ کی جانب سے ضلع وہاڑی کے 5 حلقوں سے الیکشن لڑا گیا لیکن وہ کہیں بھی کامیاب نہ ہوسکے۔ انہوں نے گزشتہ الیکشن میں 2 حلقوں سے اپنی صاحبزادیوں عائشہ اور عارفہ کو کھڑا کیا تھا جبکہ دو حلقوں سے ان کی دونوں بیگمات نے بھی الیکشن لڑا تھا۔

مزیدخبریں