” میں نے خود جار کر دیکھا ، کلثوم نواز کی موت ہو گئی ہے اور وہ ۔۔۔“ پاکستانی شہری نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا ، کیا اس کی بات درست ہے ؟ آپ بھی حقیقت جانئے

” میں نے خود جار کر دیکھا ، کلثوم نواز کی موت ہو گئی ہے اور وہ ۔۔۔“ پاکستانی ...
” میں نے خود جار کر دیکھا ، کلثوم نواز کی موت ہو گئی ہے اور وہ ۔۔۔“ پاکستانی شہری نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا ، کیا اس کی بات درست ہے ؟ آپ بھی حقیقت جانئے

  

لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن )کلثوم نواز اس وقت لندن میں زیر علاج ہیں اور ان کی حالت بھی تشویشناک بتائی جارہی ہے تاہم اس حوالے سے کچھ سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے کلثوم نواز کی موت کی خبریں شیئر کی گئی تاہم اب ان کی اصل حقیقت سامنے آ گئی ہے جو کہ جھوٹی او ر بے بنیاد ہیں ۔

سابق وزیراعظم نوازشریف کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز اس وقت ہارلے سٹریٹ کلینگ میں زیر علاج ہیں جہاں وہ وینٹی لیٹرپر ہیں اور ان کی حالت انتہائی تشویشنا ک بتائی جارہی ہے تاہم سوشل میڈیا پر یہ روایت رہی ہے کہ کسی بھی خبر کی تصدیق کیے بغیر ہی اسے تیزی کے ساتھ شیئر کیا جاتاہے اور صارفین اسے حقیقت سمجھ لیتے ہیں لیکن دراصل حقیقت کچھ اور ہی ہوتی ہے اور ایسا ہی کچھ کلثوم نواز کی بیماری کی خبرکو لے کر کیا گیاہے ۔ واٹس ایپ پر ایک شخص نے میسج پھیلایا کہ اس نے ہسپتال کا دورہ کیا ہے اور وہاں اس نے دیکھا کہ کلثوم نواز اپنی زندگی کی بازی ہار چکی ہیں لیکن انہیں مشینز کے ذریعے زندہ رکھا گیاہے اور اگر کوئی ن لیگی دورہ کرنا چاہتاہے تو وہ مجھ سے اس نمبر پر رابطہ کر لے ۔ اس میسج میں ہسپتال کا ایڈریس لکھاہے کہ 79 ہارلے سٹریٹ کلینک جو کہ دراصل غلط ہے ۔

یہ میسج واٹس ایپ سے ہوتا ہوا سوشل میڈیا پر بھی پھیل گیا جس کے بعد اب اس کی حقیقت سامنے آ گئی ہے ،لندن میں نجی ٹی وی جیونیوز کے نمائندے مرتضی علی شاہ نے کہاہے کہ یہ شخص ایک غلط ایڈریس پر چلا گیاہے اور اس نے غلط مریض کو دیکھ لیا ہے ، ہار لے سٹریٹ کلینک ویے ماﺅتھ سٹریٹ میں واقع ہے نہ کی 79 ہارلے سٹریٹ میں ، اور جو نمبر سکرین شاٹ میں دیا گیاہے وہ دراصل غیر فعال ہے ۔

مزید :

قومی -ڈیلی بائیٹس -