شدید بارشیں اورطوفان کس طرح مغرب کی موجودہ ترقی میں مددگار ثابت ہوئے ؟

شدید بارشیں اورطوفان کس طرح مغرب کی موجودہ ترقی میں مددگار ثابت ہوئے ؟
شدید بارشیں اورطوفان کس طرح مغرب کی موجودہ ترقی میں مددگار ثابت ہوئے ؟

  


لاہور (خرم رفیق سے) چودھویں صد ی میں مغرب میں آنے والے شدید طوفانی بارشیں اور سیلاب مغرب کی ترقی کا باعث بنیں ، جس کی وجہ سے مغرب کاخوابیدہ انسان بیدار ہوگیا ۔

اردو ادب کے نامور محقق ڈاکٹر انور سدید نے اپنی کتاب ”اردو اب کی تحریکیں“میں ایک مغربی محقق کے حوالے سے لکھاہے کہ چودھویں صدی میں مغرب میں آنیوالی قدررتی آفات جن میں شدید طوفانی بارشیں اور سیلاب شامل تھے نے مغرب کے خوابیدہ انسا ن کو بیدار کردیا اور وہ اپنی بقاءکیلئے تخلیقات کرنے اور دیگر دنیا کی طرف دیکھنے پر مجبور ہوا ۔

یوں مغرب پر آنیوالے ان طوفان بادوباراں کا مغرب کی موجودہ ترقی اور دنیاپر ان کے غلبہ پانے میں ایک اہم کردار ہے۔ ان آفات کی وجہ سے مغرب میں جدوجہد کا جذبہ پیدا ہوا جس کی بناءپر اہل مغر ب نے جدید علوم وفنون سیکھ کر دنیا کے دیگر حصوں کی جانب جدید سازو سامان کے ساتھ مراجعت کی اور یوں مشرق پر غالب آنے اور مشرقی وسائل سے مستفید ہونے میں کامیاب ہوگئے ۔

مزید : ادب وثقافت