پاکستان بائیو سیکیور کرکٹ کے منفرد تجربہ کا حصہ بننے کو تیار

          پاکستان بائیو سیکیور کرکٹ کے منفرد تجربہ کا حصہ بننے کو تیار

  

لاہور(سپورٹس ڈیسک)میدان ویران ہونے کی وجہ سے کرکٹ بورڈ زبھی مالی بحران کا شکار ہیں، اخراجات میں کمی کے لیے مختلف ترقیاتی کاموں کو روکنے کے ساتھ ملازمین کی چھانٹی یا ان کی تنخواہوں میں کٹوتی سے بھی گریز نہیں کیا جا رہا، اس مشکل صورتحال میں انگلش کرکٹ بورڈ نے جرات مندانہ قدم اٹھاتے ہوئے بائیو سیکور ماحول میں میچز کروانے کے منصوبے پر کام کئی ہفتے قبل شروع کر دیا تھا، کھلاڑیوں اور آفیشلز کی حفاظتی تدابیر کے ساتھ نقل و حمل کے لیے منصوبہ سازی کی گئی، قیام و طعام کا بندوبست بھی سٹیڈیمز سے ملحقہ وینیوز میں کرنے کا انتظام کیا گیا انگلش کرکٹ بورڈ پاکستانی دستے کو لاہور سے اڑان بھرنے کے لیے جو چارٹر طیارہ بھیج رہا ہے اس پر 10 کروڑ 35 لاکھ روپے خرچہ آئے گا، ویسٹ انڈین ٹیم کو بھی اسی طرح کی سہولت فراہم کی گئی۔

تھی لیکن یہ سودا مہنگا نہیں ہے کیونکہ ای سی بی کا کروڑوں پاؤنڈز کا نشریاتی حقوق کا معاہدہ بچ جائے گا۔انگلینڈ کی ویسٹ انڈیز اور پاکستان کے خلاف سیریز صرف میزبان ملک کے لیے ہی نہیں بلکہ انٹرنیشنل کرکٹ کے لیے بھی انتہائی اہمیت کی حامل ہے، کوئی ویکسین یا باقاعدہ علاج دریافت نہ ہونے کی وجہ سے کورونا کا بحران کب تک رہے گا، فی الحال اس کے بارے میں کوئی پیش گوئی نہیں کی جاسکتی۔

ان حالات میں ادارے بقا کی جنگ جیتنے کے لیے مختلف تدابیر پر غور کر رہے ہیں، کرکٹ کی دنیا کو بھی یہی چیلنج درپیش ہے، انگلینڈ میں ہونے والے انٹرنیشنل مقابلے دیگر ملکوں کو بھی راستہ دکھائیں گے۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -