ایس ایم ایز کے شعبہ کی ترقی قومی معیشت کی ترقی کیلئے ناگزیر ہے،عثمان ذوالفقار

  ایس ایم ایز کے شعبہ کی ترقی قومی معیشت کی ترقی کیلئے ناگزیر ہے،عثمان ...

  

اسلام آباد (اے پی پی) پاکستان بزنس فورم کے صدر اور ایف پی سی سی آئی کی قائمہ کمپٹی برائے ٹیکسٹائل کے سابق چیئرمین صاحبزادہ میاں عثمان ذوالفقار نے کہا ہے کہ ایس ایم ایز کے شعبہ کی ترقی قومی معیشت کی ترقی کیلئے ناگزیر ہے۔ جاپان, جنوبی کوریا,چین, سنگاپور اور دیگر درجنوں ممالک نے ایس ایم ای کے شعبہ پر توجہ دے کر ہی ترقی کی ہے مگر پاکستان میں صورتحال مختلف ہے۔ ملک میں زیادہ تر پیداوار، روزگار اور برآمدات ایس ایم ایز کر رہی ہیں مگر پالیسی سازی کے عمل میں ان پر مطلوبہ توجہ نہیں دی جاتی بلکہ بڑے بزنسز کی فلاح و بہبود کو ترجیح دی جاتی ہے۔ اسی طرح بینکوں کی جانب سے چھوٹے اور درمیانے درجہ کے کاروباروں کیلئے قرضوں تک آسان رسائی نہ ہونے سے ملکی معیشت ترقی نہیں کر پاتی۔ صاحبزادہ میاں عثمان ذوالفقار نے مختلف تجارتی تنظیموں کے نمائندوں سے زوم پر بات چیت کرے ہوئے کہا کہ کرونا وائرس کی وبا سے ایس ایم ایز کے شعبہ کی کمر ٹوٹ گئی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ایس ایم ایز کے لئے مختص فنڈز میں سے بڑے کاروباروں کو قرضے جاری کئے جاتے ہیں۔

جس کی وجہ سے معاشی ترقی کے اہداف کا حصول ممکن نہیں ہوتا. انہوں نے مرکزی بینک سے مطالبہ کیا کہ ایس ایم ایز کو نظر انداز کرنے والے بینکوں کے خلاف کاروائی کی جائے۔

اور مستقبل میں انہیں قرضے دینے کا پابند کرنے کا کوئی منصوبہ بنایا جائے۔ انھوں نے سٹیٹ بینک سے مطالبہ کیا کہ چھوٹے اور درمیانے درجہ کے کاروباری افراد کو روزگار سکیم کے تحت خصوصی ریلیف دیا جائے تاکہ وہ موجودہ بحران سے نمٹ سکیں۔ انہوں نے کہا کہ زرعی شعبہ ہمارے ملک کی معیشت کیلئے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت کا حامل شعبہ ہے جس پر بھی خصوصی توجہ کی ضرورت ہے۔

مزید :

کامرس -