بانی متحدہ دہشت گردی کے ذریعے دوبارہ زندہ ہونا چاہتا ہے: مصطفی کمال

  بانی متحدہ دہشت گردی کے ذریعے دوبارہ زندہ ہونا چاہتا ہے: مصطفی کمال

  

کراچی (این این آئی) پاک سر زمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہ ہے کہ بانی متحدہ دہشتگردی کے ذریعے دوبارہ زندہ ہونا چاہتا ہے، اس کو سانسیں دینے میں تین عوامل شامل ہیں،پہلی وجہ یہ ہے کہ کچھ ناعاقبت اندیش لوگوں نے بانی متحدہ کے خاتمے کے بعد ایم کیو ایم پاکستان بنا لی،دوسری اہم بات وہ یہ کہ کراچی کو پی ٹی آئی کی گود میں ڈال دیا گیا۔ الیکشن والے دن ہم جیت رہے تھے پھر ٹی وی سے نتائج (بقیہ نمبر41صفحہ7پر)

غائب ہو گئے اور پی ٹی آئی جیت گئی، جیتنے والے اپنے گھروں میں سوتے رہے، گزشتہ انتخابات میں حقیقی عوامی نمائندوں کا راستہ روکا گیا اس لیے بانی متحدہ زندہ ہو رہا ہے۔ تیسری جانب پیپلز پارٹی کی متعصب حکومت ہے جو شہری علاقوں کو انکے جائز آئینی حقوق بھی نہیں دے رہی، پیپلز پارٹی کے تعصب کا فائدہ بھی بانی متحدہ کو ہورہا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی پریس کلب میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر صدر پی ایس پی انیس قائم خانی سمیت دیگر مرکزی زمہ داران بھی موجود تھے، سید مصطفی کمال نے ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس کے فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ فیصلہ آنے سے لے کر اب تک خاموش تھا کیونکہ دیکھنا چاہتا تھا کہ نام نہاد مہاجروں کے نمائندے اپنے غلط ہونے کا اعتراف کریں گے کہ نہیں، لیکن نہیں کیا۔ فیصلہ دس سال بعد اور تمام شواہد کو مد نظر رکھتے ہوئے عدالت کے فیصلے کے مطابق بانی متحدہ نے ایم کیو ایم کے کنوینر عمران فاروق کے قتل کے احکامات دیئے، ہم نے آج تک اپنے الفاظ کو گھمائے پھرائے بغیر واضح موقف دیا ہے، چار سال سے وہی بات کررہے تھے جو عدلیہ کا فیصلہ آیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے بانی متحدہ کے خلاف بغاوت اسی لیے کی کہ ہمیں ان حقائق کا ادراک ہو چکا تھا۔ جو مٹھی بھر لوگ قوم کو اب بھی گمراہ کر رہے ہیں عمران فاروق قتل کیس انکے تابوت میں آخری کیل ثابت ہوگا۔ ہمارے آنے کے بعد شہدا قبرستان میں تالے پڑ گئے، بانی ایم کیو ایم کو لوگوں کا خون چاہیے، بھارت اسے اسکے پیسے دیتا ہے۔

مصطفی کمال

مزید :

ملتان صفحہ آخر -