محکمہ صحت ملتان میں کروڑوں کی مالی بے ضابطگیاں،انکوائری شروع

  محکمہ صحت ملتان میں کروڑوں کی مالی بے ضابطگیاں،انکوائری شروع

  

ملتان (وقائع نگار)صوبائی سیکرٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ پنجاب نے محکمہ صحت ملتان میں کروڑوں روپے کی مالی بے ضابطگیوں۔بوگس بلز پاس ہونے پر سابق ڈی ایچ او (پی ایس) کے خلاف محکمانہ انکوائری شروع کردی ہے۔جسکو مکمل کرنے کیلئے دو رکنی کمیٹی تشکیل دے دی گئی۔انکوائری کمیٹی ڈپٹی سیکرٹری بی اینڈ اے واجد علی اور ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز (بقیہ نمبر27صفحہ6پر)

گجرانوالہ ڈاکٹر نصرت ریاض پر مشتمل ہے۔جو دو روز کے اندر سابق ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر پی ایس ڈاکٹر سلیم اکبر لغاری کے خلاف انکوائری فائنل کریں گے۔واضح رہے ڈاکٹر سلیم اکبر لغاری نے سی ای او ہیلتھ کا اضافی چارج ملنے کے بعد پینڈنگ بوگس بلز پر دستخط کرنے کے عوض انجم نذیر کیشئر کے ذریعے لاکھوں روپے کمیشن وصول کیئے تھے۔ بعد ازاں میڈیا پر خبر چلنے کے بعد انجم نذیر نے جان بوجھ کر پاس شدہ بلز پر اکاؤنٹس آفس سے اعتراض لگواکر بلز غائب کر دیئے۔ کیونکہ دفتر کے ٹوکن رجسٹر پر اندراج تک نہیں کیا گیا تھا۔اس کے علاوہ ڈاکٹر سلیم اکبر لغاری پر ایل ایچ وی کو جنسی ہراساں کرنے کا بھی الزام تھا۔جسکی کی انکوائری بھی مختلف فورم پر چل رہی ہے۔دوسری جانب چیف ایگزیکٹو آفیسر ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر ارشد ملک کا کہنا ہے کہ سابق ڈی ایچ او پی ایس کے خلاف خاتون ایک ایچ وی نے تحریری طور پر درخواست دی ہے۔جس پر انکوئری مارک کردی ہے۔اصل حقائق کی روشنی پر محکمانہ کاروائی کی جائے۔بیک تاریخوں میں مختلف بلز پاس ہونے کی اطلاعات موصول تو ہوئیں۔مگر اصل صورت حال کا انکوائری کے بعد معلوم ہوگا۔

انکوائری

مزید :

ملتان صفحہ آخر -