بجٹ میں ضلع مظفرگڑھ نظرانداز، ارکان اسمبلی دعوؤں سمیت لاپتہ

          بجٹ میں ضلع مظفرگڑھ نظرانداز، ارکان اسمبلی دعوؤں سمیت لاپتہ

  

چوک سرورشہید(سٹی رپورٹر) چو ک سرورشہید سے دوبار ممبر صوبائی اسمبلی پیپلزپارٹی کے رہنما چوہدری احسان الحق نولاٹیہ نے وفاقی وزیر مملکت شبیر علی قریشی کی قومی اسمبلی میں بجٹ پیش ہونے کے بعد کی تقریرمیں چوک سرورشہید کو تحصیل کا درجہ کا مطالبہ، ضلع مظفرگڑھ کو محروم رکھنے کے شکوے، صرف اور صرف حلقہ کی عوام کو بے وقوف بنانے کی کوشش ہیں،کیا (بقیہ نمبر31صفحہ6پر)

عوام یہ بات نہیں سمجھتی کہ چوک سرورشہید کو تحصیل کادرجہ دلوانے کے جھوٹے اعلانات کروائے گئے۔ شبیر علی قریشی عمران خان کا چہیتا ہے۔اسے عمران خان نے جہانگیر ترین کے ذریعہ خریدا ہوا ہے۔بجٹ پیش ہونے کے بعد اسمبلی میں رونا ہم سمجھتے ہیں۔وفاقی وزیر مملکت شبیر علی قریشی کی وجہ مظفرگڑھ ضلع کو یکسر نظر انداز کیا گیا ہے۔ یہاں کی 43لاکھ کی آبادی زندگی کی تمام سہولیات سے محروم ہیں۔ ایک بھی یونیورسٹی موجود نہ ہے نہ ہی کیمپس ہے، ہمارے ساتھ ہمسائیہ ضلع لیہ جسکی آباد ی ضلع مظفرگڑھ سے نصف ہے وہاں پر چھے یونیورسٹیوں کے کیمپس ہیں۔ ہمارے پورے ضلع میں ایک بھی بین الاقوامی معیار کا ہسپتال موجود نہ ہے۔جبکہ ضلع لیہ میں برن ہسپتال، دل کا ہسپتال موجود ہے۔ اب ہمارے دور کی بنی سڑکیں بھی موجودہ حکومت کی نااہلی کی وجہ سے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں۔حکومت نام کی کوئی شے دکھائی نہیں دیتی،ملک کی معشیت کا بھٹہ بٹھادیا گیا ہے۔حکومت کی اس سے بڑی نااہلی کیاہوگی۔ کہ جس چیز کا وزیر اعظم نوٹس لیتا ہے وہ مزید بگڑ جاتی ہے عوام پٹرول کی بوند بوند کو ترس گئے ہیں۔ اگر یہ ہی حال رہا تو ملک خانہ جنگی کا شکار ہوکر ٹوٹ سکتا ہے۔

لاٹیہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -